چین کی ثالثی کی پیشکش ہندوستان نے مسترد کر دی

چین کی ثالثی کی پیشکش ہندوستان نے مسترد کر دی

نئی دہلی:۱۳ جولائی۔کشمیر کے مسئلے کے حل کے سلسلہ میں ہندوستان نے چین کی ثالثی کی پیشکش مسترد کی ہے۔نئی دہلی میں وزارتِ خارجہ کے ترجمان گوپال باگلی نے ہفتہ وار بریفنگ کے دوران بتایا کہ اس سلسلہ میں ہمارا مئوقف بالکل واضح ہے۔سب جانتے ہیں کہ اصل معاملہ یہ ہے کہ سرحد پار سے دوسرے ملک کی دہشت گردی ہمارے ملک،خطہ اور پوری دنیا کے امن کے لئیے خطرہ ہے۔ہم باہم طور پر طئے شفہ لائحۂ عمل میں رہ کر کشمیر کے مسئلے پر پاکستان سے گفتگو کے لئے تیار ہیں۔اس سلسلہ میں ہندوستان کو چین کی ثالثی منظور نہیں۔ہمارا ملک چین کے ’’تعمیری رول‘‘ پر راضی نہیں ہے۔واضح رہے کہ گزشتہ روز ہندوستان اور پاکستان کے درمیان بڑھتی ہوئی کشیدگی پر چین کی وزارتِ خارجہ کے ترجمان جینگ شوانگ نے تشویش ظاہر کرتے ہوئے کہا تھا کہ یہ ٹکرائو کشمیر کی لائن آف کنٹرول کے پاس ہو رہا ہے جس نہ صرف ہندوستان اور پاکستان بلکہ پورے خطے کو نقصان پہنچے گا۔ترجمان نے یہ بیان ایک ایسے وقت پر دیا ہے جب ہندوستان اور چین کے درمیان کشیدگی جاری ہے اور سکّم کے ڈوکلام علاقے میں دونوں ملکوں کی افواج آمنے سامنے ہیں۔بہرحال گوپال واگلی نے واضح کیا ہے کہ کشیدگی پر قابو پانے کے لئے دونوں ملک سفارتی سطح پر کوشش کر رہے ہیں۔انہوں نے اس بات کا اعادہ بھی کیا کہ جی۔۲۰ چوٹی کانفرنس میں مودی اور صدر زی پینگ نے متعدد معاملات پر گفتگو کی اگرچہ چین نے اس دعوے کی تردید کی ہے۔دریں اثنا مرکزی حکومت جس طرح سکّم کی سرحد اور کشمیر کے مسئلے سے نمٹ رہی ہے اس پر اپوزیشن نے شدید تنقید کی ہے۔




Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *