سیمانچل سیلاب متاثرین کے لئے جمعیۃ علماء ہند نے پہلے مرحلے میں تین سواکسٹھ مکانات بنانے کا عزم

سیمانچل سیلاب متاثرین کے لئے جمعیۃ علماء ہند نے پہلے مرحلے میں تین سواکسٹھ مکانات بنانے کا عزم

صوبائی صدر مولانامحمدقاسم نے جمعیۃ کالونی کی تعمیر کا کیا اعلان ،سردیوں میں سیلاب متاثرین کوکمبل کی تقسیم کا فیصلہ
کشن گنج (بی این ایس)
جمعیۃ علماء صوبہ بہارکے صدر محترم مولانا محمد قاسم قاسمی نے اپنے مرکزی قائدین کی ایماء پر آج سیمانچل کے ذمہ داران کی ایک خصوصی میٹنگ میں اعلان کیا کہ انشاء اللہ جمعیۃ علماء صوبہ بہار دیگر صوبائی جمعیتوں اور اپنے مرکز جمعیۃ علماء ہند کے بھر پور تعاون سے پہلے مرحلے میں سیلاب متاثرہ اضلاع میں انتہائی مجبور اور تباہ و برباد ہوئے خاندانوں کے لئے تین سو اکسٹھ مکانات کی تعمیر کرے گی۔ میٹنگ میں سیمانچل کے سارے اضلاع بشمول اتردیناج پور مغربی بنگال کے ضلعی عہدیداران شر یک تھے ۔ تلاوت کلام پاک سے جاری میٹنگ کی صدارت کرتے ہوئے اپنے خطبہ صدارت میں موصوف نے جمعیۃ علماء بہار کی جانب اور ضلعی جمعیتوں کے تعاون سے روز اول سے سیلاب متاثرین کے لئے ہوئی کوشسوں اور تفصیلات کا ذکر کیا اور اپنے مرکزی قائدین جناب مولاناقاری سید محمد عثمان منصورپوری (صدر جمعیۃعلماء ہند )جانشین فدائے ملت مولانا سید محمود اسعد مدنی(ناظم عمومی) کی جانب سے ملنے والی ہدایات کی روشنی میں مزید کام کرنے کا اپنے ماتحتین کو مشورہ دیا۔کشن گنج جمعیۃ کے سیکریٹری مولانا مفتی محمد مناظر نعمانی قاسمی کی نظامت میں جمعیۃ علماء ریلیف کمیٹی بہار کے کنوینراور مرکزی رکن مجلس عاملہ مولانامفتی محمدجاوید اقبال قاسمی نے بہار سیلاب کی پہلے رو ز سے کی گئی خدمات کا تفصیلی خاکہ حاضرین کے گوش گذار کیا ۔سیلاب کی تباہ کاری اوربازآبادکاری کی ضروریات،سیلاب آنے کے بعدآئے مختلف وفود کی جانب سے جمعیۃ علماء ریلیف کمیٹی کی نگرانی میں تعمیر کردہ۹۹؍ ننانوے مکانات کے تعمیری جائزہ کے ساتھ عیدالاضحی کے موقع پرمتاثرین کے درمیان کئے گئے قربانی کے نظم اور ان تمام خدمات میں کام کرنے والے ضلعی و مقامی ذمہ داران نیز مرکزی ٹیم کی بھی حوصلہ افزائی کرتے ہوئے موصوف نے شکریہ ادا کیا۔موصوف نے فرمایا کہ سیلاب کی وجہ سے پیدا ہونے والے سنگین حالات میں ہم سب گھرے ہوئے تھے اور ان دنوں جبکہ ہمارے حوصلے انتہائی پست ہورہے تھے ہمارے ان اکابرین نے ہمیں دلاسہ دے کر آگے بڑھایا اور ہماری مستقل ہمت افزائی اور حوصلہ افزائی کے لئے مرکز سے مولانا حکیم الدین قاسمی کو یہاں بھیجا اور انہوں نے یہاں پہنچ کر ہم میں جو حوصلہ پھونکا بظاہرانہی کے حوصلوں کے سبب ہم سب مصیبت زدہ لوگ اپنے عام مصیبت زدہ بھائیوں کی اتنے بڑے پیمانے پر امداد و راحت رسانی کر سکے ہیں۔ سکریٹری جمعیۃ علماء ہند مولانا حکیم الدین قاسمی جو بنگلہ دیش سے واپس پہنچے تھے نے شکر الٰہی ادا کرتے ہوئے فرمایا کہ یہ اللہ رب العزت کا فضل اور ہمارے بزر گوں کی توجہات کا ثمرہ ہے ان سارے کاموں میں ہمارا کوئی کمال نہیں ہے۔واضح ہوکہ بنگلہ دیش میںہجرت کر کے آئے اور پناہ لئے مظلومیت کے شکار روہنگیا مسلمانوں کے درمیان جمعیۃ علماء ہند کی جانب سے راحت رسانی کے عمل کو منظم کر نے اور تمام حالات کا جائزہ لینے مولانا محمود مدنی کی ہدایت پر موصوف دوسری دفعہ بنگلہ دیش گئے تھے ۔اپنے مختصر خطاب میں مو صوف نے سروے کے ابتدائی جائزے کے پیش نظر اپنے مرکزی صدر محترم اور ناظم عمومی کے حوالے سے بازآبادکاری پروگرام کے سلسلے میں اہم گفتگو کرتے ہوئے دلجمعی کے ساتھ کام کرنے کی گذارش کی۔صدر مجلس نے اپنے خطاب میںخوشی کا اظہارکرتے ہوئے فرمایا کہ آپ حضرات نے متاثرین سیلاب کی فلاح وبہبوداور ترقی کے لئے جو بھی کام کیا ہے اس کا حقیقی اجر تو اللہ تبارک وتعالٰی دیگا۔ دنیا میں اس کااجر کوئی نہیں دے سکتا، اسی طرح سیلاب متاثرین کے لئے کام کرنے والے تمام ارکان و عہدیداران جمعیۃ ،مدارس دینیہ و مکاتب قرآنیہ کے اساتذہ کے کام کوبھی سراہتے ہوئے ان کے حق میں دعاء خیر کی گئی۔واضح رہے سیمانچل سمیت شمالی بہار میں آئے بھیانک ،قیامت خیز سیلاب کی تباہی نے عام انسانوں کے ساتھ جو دشواریاں پیداکی ہے وہ کسی بھی خاص وعام سے مخفی نہیں ۔ان کی راحت رسانی کیلئے جمعیۃ علماء ہند کے صدر محترم ،ناظم عمومی صاحبان کی ہدایت کے مطابق جمعیۃ علماء بہار کے صدر محترم،جمعیۃ علماء بہارکے جنرل سکریٹری مولانا محمدناظم قاسمی، مقامی یونیٹوں بالخصوص مدارس دینیہ کے طلباء و اساتذہ کے تعاون سے سیلاب متاثرین کیلئے اول دن سے ہی وقتی راحت وبچاو میں لگے ہوئے ہیں اور یہ سلسلہ آج بھی برابر جاری ہے۔اس میں مزید تیزی لانے اور وقتی راحت رسانی کے بعد بازآبادکاری اور دیگر پیش آمدہ مسائل پر غوروفکر کرنے کے لئے سیمانچل سیلاب زدگان ریلیف کے مرکزی آفس جامعہ حسینیہ فرنگولہ کشن گنج میں آج ۱۸؍ اکتوبر ۲۰۱۷ء؁ دن میں گیارہ بجے ایک نشست بلائی گئی۔دینی مدارس کے اساتذہ باوجودیکہ طلبہ کی تعلیم وتربیت میں ہمہ وقت مصروف رہتے ہیںمگر ہنگامی حالات اور قوم وملت کے مسائل میں بھی وہ ضرور دلچسپی لیتے ہیں۔ابھی شمالی بہارسمیت سیمانچل میں جو بھیانک اور قیامت خیز سیلاب نے تباہی مچائی، مدارس دینیہ کے اساتذہ نے سیلاب متاثرین کے لئے بڑھ چڑھ کر حصہ لیا،ان کی اس جدوجہد کا صدرمحترم نے برملااعتراف کرتے ہوئے گذارش کی کہ سیلاب کی وجہ سے جولوگ گھر سے بے گھر ہوگئے ہیں، اس کی باز آباد کاری کی شدید ضرورت ہے ایک مکان بنانے پر تقریبا پچاس ہزار روپے خرچ آنے کا امکان ہے صدرموصوف کی اس آواز پر عہدیداران ضلعی جمعیۃ نے نہ صرف لبیک کہابلکہ ہر طرح کے تعاون کا بھی یقین دلایااپنے ضلعی ذمہ داران کی یقین دہانی پر صدرمحترم نے خوشی کا اظہارکرتے ہوئے مغربی بنگال کے ضلع اتر دیناجپور،کشن گنج،ارریہ، پورنیہ،کٹیہار میں گھر سے بے گھر ہونے والے لوگوں کے لئے مرکز اور دیگر صوبائی جمعیتوں کے تعاون سے ڈھائی سو اور صوبہ بہار جمعیۃ کی جانب سے چار اضلاع میں بارہ بارہ مکانات اور کمار مونی نامی گاؤں جو کشن گنج شہر سے چھ کلومیٹر پر واقع ہے یہاں ایک ساتھ ترسٹھ مکانات سیلاب سے پوری طرح بہہ گئے اور اس بستی میں پندرہ سولہ مقامات پر بیس بیس فٹ اور اس سے زائد کے گھڑے ہوگئے ہیں اس مقام پر جمعیۃ علماء کی کوشسوں سے مقامی ڈی ایم صاحب نے فوری ایکشن لیتے ہوئے مٹی بھرائی کاکام شروع کیا ہے اور اب تک دو ہزار ٹیکٹر سے زائد مٹی ڈالی جا چکی ہے لیکن وہ گھڑے بھر ے نہیںہیں مکمل بھرائی ہوجانے کے بعد انشاء اللہ ان متاثرین کو دوبارہ ان کی اپنی زمین پر بسایا جائے گا اور اس مقام پر ترسٹھ مکانات کی ایک کالونی بنام جمعیت کالونی تعمیر کی جائے گی۔میٹنگ میں تعمیراتی کاموں کے لئے مرکز اور جمعیۃ علماء بہار ریلیف کمیٹی کی نگرانی میں ایک پانچ نفری تعمیراتی کمیٹی بنائی گئی جس میں مولانا خالد انور قاسمی، مو لا نا نوید قاسمی،مولانا محمد معروف کرخی قاسمی(صاحبزادہ مولانا محمد ادریس صاحبؒ) مفتی محمد مناظر قاسمی،جناب الحاج محمد مسلم کو شامل کیا گیا۔ان حضرات کی نگرانی میں پانچوں اضلاع میں تعمیراتی کام انجام دئے جائیں گے نیز ہر ضلع میں ضلعی جمعیۃ کے مشورے سے ان ہی کے ماتحت کاموں کے نگراں افر اد کو یہ کمیٹی متعین کرے گی۔اس اہم میٹنگ میںجمعیۃ علماء ہند کے آر گنائز ر س مولانا شفیق احمد القاسمی مالیگانوی ،قاری نوشاد عادل قاسمی،،مولانا مرغوب الرحمن قاسمی (جنرل سیکریٹری رابطہ مدارس عربیہ صوبہ بہار)مفتی خالد انور پورنوی قاسمی( ایڈیٹر ماہنامہ ندائے قاسم پٹنہ)مفتی محمد اطہر القاسمی(جنرل سیکریٹری جمعیۃ علماء ضلع ارریہ ) مولانا امتیاز احمد قاسمی (صدر جمعیۃ علماء ضلع پورنیہ) مولانا محمد عارف قاسمی (نا ئب صدر)حافط راغب صاحب،مولانا حدیث اللہ نصر بھاگل پوری( نائب صدر جمعیۃ علما ء ارریہ)مولانامفتی محمد عیسی قاسمی(مہتمم جامعہ حسینیہ اسلام پور ،صاحبزادہ و جانشین حضرت مولانا محمد ادریس صاحب رحمۃ اللہ علیہ)مولانا ہاشم اختر قاسمی(استادجامعہ حسینیہ اسلام پور)مولانا اسلام الدین قاسمی (صدر جمعیۃ علماء اتر دیناجپو ر )قاری عبداللہ (نائب صدر ) مولانا عبدالباسط (سیکریٹری جمعیۃ علماء کشن گنج)مولانا نجم الہد ی قاسمی(نائب صدرکٹیہار)مولانامحمد بدرالدجٰی قاسمی(جنرل سیکریٹری کٹیہار) مولانا ابو صالح قاسمی (جنرل سیکریٹری ضلع پورنیہ)مولانا فاروق صاحب (نائب صدر ضلع ارریہ)مفتی منصور عالم قاسمی(جامعہ امدادیہ مادھے پور کٹیہار) الحاج بذل الرحمن صاحب (سرپرست ارریہ) حاجی مہتاب الدین، مولانا ریاض الدین قاسمی ابن مولانا غیاث الدین قاسمی، قاری مرغوب الرحمن،مفتی عبدالحنان قاسمی،مولانا نفیس احمدقاسمی، مفتی محمد سلمان مظاہری ارکان کشن گنج سمیت دیگر اضلاع کے معزز اراکین وعہدیداران جمعیۃ علماء کثیر تعداد میں شریک تھے۔میٹنگ میں اضلاع کے نمائندہ افراد نے اپنے اپنے علاقے کے اعتبار سے سروے اور تعمیراتی کاموں کو کئے جانے سے متعلق باتیں رکھی اور پائیدار و مستحکم کام پر بھرپور توجہ دینے کا عزم کیا۔




Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *