دیوبند میں سہ روزہ تبلیغی اجتماع آج سے

دیوبند میں سہ روزہ تبلیغی اجتماع آج سے

ملک بھر سے لاکھوں لوگوں کی شرکت متوقع،اجتماع کی تیاریاں آخری مرحلہ میں
دیوبند،5؍ دسمبر(ایس۔چودھری)تبلیغی جماعت کا سہ روزہ اجتماع آج سے دیوبند(راجوپور) میں شروع ہوگا ،جس میں لاکھوں کی تعداد میں لوگوں کی شرکت متوقع ہے،اجتماع کی تیاریاں آخری مرحلہ میں ہیںاور مقامی لوگ بلا تفریق مذہب وملت اجتماع کی تیاریوں میں بڑھ چڑھ کر حصہ لے رہے ہیں۔آج جمعیۃ علماء دیوبند کی یونٹ اور مرکز کے حلقہ نمبر 12؍ پٹھانپورہ دیوبند کے ذمہ داران نے اجتماع گاہ پہنچ کر تعاون کرتے ہوئے علاقہ کے لوگوں سے بڑھ چڑھ کر آنے والوں مہمانوں کی خدمت کرنے کی اپیل کی ۔ واضح رہے کہ دیوبند کے راجوپور علاقہ میں یہ اجتماع گزشتہ ماہ نومبر میں متوقع تھا مگر عین وقت پر بلدیہ انتخابات کی تاریخوں کے اعلان کے سبب یہ اجتماع وقتی طورپر موقوف کردیا تھا اب یہ سہ روزہ اجتماع آج 6؍دسمبرسے شروع ہوگا ،جو 8؍دسمبر کو اجتماعی دعاء کے ساتھ اختتام پذیر ہوگا۔اجتماع میں تبلیغی مرکز حضرت نظام دہلی کے ذمہ داران کی پوری ٹیم شرکت کریگی۔ حلقہ نمبر 12؍ پٹھانپور دیوبند کے ذمہ دارمسعود خاں رانا نے بتایاکہ اجتماع میں ملک کے مختلف صوبوں سے تقریباً ڈیڑھ لاکھ کے قریب لوگ شرکت کرینگے،انہوںنے بتایا آخری دن 8؍ دسمبر کو دعاء میں دولاکھ سے زائد لوگوں کی شرکت متوقع ہے۔انہوںنے بتایا کہ اجتماع میں مرکز کے ذمہ داران کے علاوہ مختلف صوبوںکے حلقوںکے ذمہ داران شرکت کرکے عوام الناس کو اپنی قیمتی نصیحتوں سے نوازے گیں اور اسلام کے امن و شانتی کے پیغام کو عام کرنے کے ساتھ ساتھ دنیامیں امن وسلامتی کی دعاء کرائینگے۔انہوں نے بتایاکہ اجتماع میں مولانا سعد کاندھلوں کی شرکت بھی متوقع ہے۔ راجوپور سمیت پورے علاقہ کے لوگ بڑھ چڑھ کر اس اجتماعی کی تیاریوں میں مصروف ہیں اور اپنی جانب سے ہر ممکن تعاون کرنے کی کوششوں میں مصروف ہیں۔ اجتماع گاہ میں وضو خانہ،بیت الخلاء،طبی کیمپ اور آرام گاہ کے علاوہ جلسہ گاہ کی تیاریاں جنگی پیمانے پر تکمیل کی جانب گامزن ہیں۔آج جمعیۃ علماء ہند دیوبند یونٹ کی ٹیم نے ضلع جنرل سکریٹری سید ذہین احمد کی قیادت میں جلسہ گاہ پہنچ کر تیاریوں کا جائزہ لیتے ہوئے تعاون کیا۔ ادھر حلقہ 12؍ پٹھانپورہ دیوبند کی ٹیم مسعود خاں رانا کی قیادت میں خدمات میں سرگرم عمل ہے۔راجوپور جمعیۃ علماء ضلع سکریٹری مولانا ابراہیم قاسمی،قاری سعید احمد اورقاری سلیم وغیرہ بھی پہنچے۔