شیعہ وقف بورڈ کے چیئرمین کا بیان ان کی ذہنیت کی عکاسی ہے: مجلس اتحاد ملت

شیعہ وقف بورڈ کے چیئرمین کا بیان ان کی ذہنیت کی عکاسی ہے: مجلس اتحاد ملت

دیوبند، 12جنوری (رضوان سلمانی) شیعہ وقف بورڈ کے چیئرمین وسیم رضوی کے ذریعہ گزشتہ دنوں مدارس پر دہشت گردی کا مرکز بتائے جانے پر ان کے خلاف مذمتوں کا سلسلہ رکنے کا نام نہیںلے رہا ہے اور ان کے خلاف مقدمہ قائم کئے جانے کا مطالبہ کیا جارہاہے ، اسی تناظر میں مجلس اتحاد ملت کے جنرل سکریٹری حافظ اطہر عثمانی نے سخت الفاظ میں مذمت کرتے ہوئے کہاکہ ویسے تو وسیم رضوی کے اس ناسمجھی والے بیان پر تبصرہ کرنا ضرورنہیں سمجھتا مگر جو اپنے مفاد کے لئے اس قسم کی بیان بازی کرتے ہیں یہ ان کی ذہنیت کی عکاسی ہے۔ انہوں نے کہا کہ وسیم رضوی کے بیان کو خود ان کے شیعہ طبقے نے ہی مسترد کردیا ہے ۔ انہوں نے جمعیۃ علماء ہند کی تعریف کرتے ہوئے کہاکہ جس طریقے پر جمعیۃ کی طرف سے وسیم رضوی کے خلاف جو قدم اٹھایا ہے وہ ایک اچھا قدم ہے،اس طرح کی کارروائی سے جھوٹے الزام اور ملت کو بدنام کرنے والے لوگوں کو سبق بھی ملے گا۔ سماجی کارکن اور جمعیۃ علماء تحصیل دیوبند کے خازن سلیم احمد عثمانی نے اپنے سخت رد عمل کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ وسیم رضوی جیسے لوگ ارباب حکومت کی خوشنودی حاصل کرنے کے لئے اس قسم کی بیان بازی کررہے ہیں ۔ انہوں نے کہاکہ اپنی لیڈری کو چمکانے کے لئے اور برسراقتدار جماعت بی جے پی کی خوشنودی حاصل کرنے کے لئے وسیم رضوی نے دینی مدارس اور ان میں تعلیم حاصل کرنے والے طلبہ عزیز کو دہشت گرد اور مدارس اسلامیہ کو دہشت گردی کا اڈہ قرار دے کر اپنے ذہنی دیوانگی کا ثبوت فراہم کر نے کی ناکام کوشش کی ہے،ان کو شاید یہ علم نہیں کہ آج ہندوستان میں اگر ہم اسلامی تشخص کے ساتھ زندہ ہیں تو صرف مدارس اسلامیہ کی ہی دین ہے۔ سلیم عثمانی نے کہا کہ وسیم رضوی نے اپنے بیان میں مدارس اسلامیہ پر پاکستان اور بنگلہ دیش جیسے مفلوک الحال ممالک کے ذریعہ فنڈنگ کا بے بنیاد الزام لگاکر اپنی جہالت کا ثبوت دیاہے۔ ہم شیعہ سینٹرل وقف بورڈ کے اس نام نہاد صدر کو بورڈ سے باہر کا راستہ دکھانے کی مانگ کرتے ہیں ۔