ٹرمپ اورمودی نے کی مالدیپ کے حالات پربات چیت

ٹرمپ اورمودی نے کی مالدیپ کے حالات پربات چیت

واشنگٹن:9فروری(بی این ایس )
امریکی صدر ڈونالڈ ٹومپ اور وزیر اعظم نریندر مودی نے مالدیپ میں سیاسی صورتحال پر تشویش کا اظہار کرتے ہوئے فون پرگفتگوکی۔وائٹ ہاؤس نے کہا کہ دونوں رہنماؤں نے افغانستان میں صورتحال اور ہندوستانی پیسفک علاقے میں سیکورٹی میں اضافہ پر بات چیت کی ۔اس سال ٹرمپ اور مودی کے درمیان فون پر ہوئی پہلی بات چیت کے بارے میں وائٹ ہاؤس نے کہاکہ دونوں رہنماؤں نے مالدیپ میں سیاسی بحران پر تشویش ظاہر کی اور جمہوری اداروں اور قانون کی حکمرانی کا احترام کرنے کی اہمیت پر زور دیا۔مالدیپ کی سپریم کورٹ کے حزب اختلاف کے 9 اعلی سیاسی قیدیوں کو جمعرات کورہاکرنے اور ان کے خلاف مقدمات کو سیاسی طور پر حوصلہ افزاء بتانے کے بعدسے ہی ملک میں سیاسی بحران چھایاہواہے۔اس واقعے کے بعدمالدیپ کے صدر عبد اللہ یامین نے سپریم کورٹ کے حکم کو قبول کرنے سے انکار کر دیا، جس کے بعد پورے ملک میں احتجاج شروع ہوگئے۔صدر نے ملک میں ایمرجنسی کا اعلان کیا، سپریم کورٹ کے چیف جسٹس عبداللہ سعید اور ایک دوسرے جج علی حمید کو گرفتار کرلیا گیا۔وائٹ ہاؤس نے کہا کہ دونوں رہنماؤں نے ہندوستانی پیسفک کے علاقے میں سلامتی اور خوشحالی کو بڑھانے کے بارے میں بھی بات کی۔مودی اورٹرمپ نے میانمار اور روہنگیا پناہ گزینوں کے مسائل کو حل کرنے کے بارے میں بھی بات کی۔