دیش بچائو کانفرنس میں پروفیسر شکیل قاسمی نے ملت کی ہمہ جہت ترقی پر زور دیا !

دیش بچائو کانفرنس میں پروفیسر شکیل قاسمی نے ملت کی ہمہ جہت ترقی پر زور دیا !

پٹنہ:16؍اپریل(بی این ایس)
امارت شرعیہ کے امیر شریعت ،مفکر اسلام حضرت مولانا ولی رحمانی صاحب کی آواز پر شدید گرمی کی مشقت برداشت کرتے ہوئے مختلف مقامات سے اتنے افراد کا جمع ہونا،وفاداری کا اظہار کرنا قابل قدر بھی ہے، لائق ستائش بھی ۔ آپ حضرات اپنے ذاتی اور وقتی مسئلہ کے حل کے بجائے تحفظ دین و دستور اور سلامتی ملک کے عظیم اور با مقصد جذبے سے سرشار ہوکر یہاں تشریف لائے ہیں ۔ آپ کا آنا مبارک ،پورا ملک آپ کے عزم و حوصلے کو خراج تحسین پیش کر رہا ہے، آج کا دن تاریخی کہلائے گا ۔ ان خیالات کا اظہار پروفیسر شکیل احمد قاسمی پٹنہ ، چیرمین فاران انٹرنیشنل فائونڈیشن انڈیا نے دین بچائو دیش بچائو کانفرنس سے ترغیبی خطاب کرتے ہوئے پٹنہ کے گاندھی میدان میں گیارہ سے ساڑھے گیارہ بجے کے درمیان کیا ۔ انہوں نے کہا کہ ہندوستان کا دستور بے حد جامع اور سارے شہریوں کے مفاد کا تحفظ کرتا ہے اس لئے ہر قیمت پر دستور کی حفاظت ہونی چاہئے ۔ جب دستور کی حفاظت یقینی ہوگی تو مذہبی آزادی کا معاملہ خود بخود حل ہو جائیگا ، اس لئے کہ مذہب کی آزادی دستور نے دے رکھی ہے اور مومن تو ہر حال میں احکام الہی کا پابند ہے ۔ ملک کی موجودہ صورت حال تشویشناک ہوتی جا رہی ہے ، اس کے وقار کی حفاظت ہر شہری کی ذمہ داری ہے ۔ ان بنیادی مقاصد کے حصول کے لئے اس عظیم الشان اجتماع سے پختہ عزم کے ساتھ لوٹیں اور سماج کی تعمیر ، تعلیم کے فروغ ، فرقہ وارانہ ہم آہنگی قائم کرنے میں لگ جائیں ۔ مذہب سے مضبوط رشتہ قائم رکھیں اور ملک کے تحفظ اور ترقی کا خیال رکھیں۔مولانا قاسمی نے توجہ دلاتے ہوئے کہا کہ عرصہ دراز کے بعد عظیم الشان بیداری ملت میں پیدا ہوئی ہے ، اسے ہر قیمت پر باقی رکھتے ہوئے شاہراہ ترقی اور صراط مستقیم پر رواں دواں ہونا چاہئے ۔