دین بچاؤ دیش بچاؤ کانفرنس کی تاریخی کامیابی پر امیر شریعت کا پیغام

دین بچاؤ دیش بچاؤ کانفرنس کی تاریخی کامیابی پر امیر شریعت کا پیغام

پھلواری شریف،پٹنہ:16؍اپریل (پریس ریلیز)
میرے بھائیو! امارت شرعیہ کی تحریک پر تمام دینی و ملی جماعتوں، خانقاہوں اور تنظیموں کی تائید اور حمایت کے ساتھ ۱۵؍ اپریل ۲۰۱۸ء؁ کو پٹنہ کے گاندھی میدان میں ہونے والی دین بچاؤ دیش بچاؤ کانفرنس کی تاریخی کامیابی پر سب سے پہلے ہم اللہ تبارک تعالیٰ کے حضور میں سجدۂ شکر بجا لاتے ہیں ، اور دعا کرتے ہیں کہ اللہ تعالیٰ آپ سبھی حضرات کی اس حاضری کو قبول کرے اور اس کو دین و ملت کے لیے فتح و سر بلندی کا ذریعہ بنائے ۔اس کے ساتھ ساتھ ان تمام لوگوں کا تہ دل سے شکریہ ادا کرتے ہیں جنہوں نے نہ تو تپتی دھوپ کی پرواہ کی ، نہ پیاس کی شدت نے ان کے قدموں میں لغزش پیدا کی ، نہ راستے کی دشواریوں نے ان کے پاؤں میں بیڑیا ں لگائیں ، بلکہ سبھی دشواریوں اور دقتوں کو پس پشت ڈال کر محض رضائے الٰہی کے حصول اور، فرمان نبوی کی عظمت و تقدس اور دین و شریعت اور ملک و ملت کی حفاظت ، آئین ہند کے وقار کی بحالی کے لیے پوری مضبوطی اور دینی حمیت و جذبے کے ساتھ انتہائی سکون و اطمینان کے ساتھ ، اسلامی تہذیب کی مکمل نمائندگی کرتے ہوئے کانفرنس میں تشریف لائے اور اس ملک کی ملی تاریخ میں ایک نیا باب رقم کر گئے ۔ یقینا آپ کو لا تعداد دشواریاں ہوئی ہوں گی ، پیاس کی شدت سے آپ کی زبانیں خشک ہوئی ہوں گی ، دھوپ کی تپش نے آپ کے بدن کو جھلسایا ہو گا ، مگر شریعت مصطفوی علی صاحبہا الصلوٰۃ والسلام کی بلندی کے لیے آپ کے جذبے میںذرہ برابر کمی نہ آئی ، یقینا آپ کے دلوں کی آوازنے ایوان باطل کو سہما دیا ہے اور عنقریب آپ اس کا دور رس اثر دیکھیں گے ۔
عینی شاہدین نے بتایا کہ لاکھوں کا مجمع پٹنہ کے مضافات میں ٹریفک میں پھنسا ہوا تھا ، جو کانفرنس کی جگہ تک نہیں پہونچ سکا ، لیکن جذبے کا عالم یہ تھا کہ ساٹھ ساٹھ برس کے بوڑھے کہہ رہے تھے کہ آپ صرف راستہ بتا دیجئے ہم پیدل گاندھی میدان پہونچ جائیں گے، ہو سکتا ہے کہ آپ میں سے بہتوں کی جسمانی موجودگی گاندھی میدان میں نہ ہو سکی ہو ، لیکن آپ روحانی اور فکری طور پر یہاں ہمارے ساتھ موجود تھے اور آپ کی فکر اور دینی حمیت کراماً کاتبین کے رجسٹر میں درج ہو رہی تھی ۔
اس کانفرنس کی کامیابی پر ہم تمام ملی تنظیموں ، قومی اداروں اور مختلف مسالک کے نمائندوں، پٹنہ کی تمام مساجد کے ائمہ کرام کو مبارک باد دیتے ہیں اور شکریہ ادا کرتے ہیں کہ آپ کی حمایت اور تعاون کے بغیر ہم اس کامیاب کانفرنس کا تصور نہیں کرسکتے تھے ۔ساتھ ہی امارت شرعیہ کے تمام ذمہ داروں ، کارکنان ، کانفرنس کے لیے بنائی گئی کمیٹیوں کے تمام ارکان، دار العلوم الاسلامیہ ، المعہد العالی ، ٹیکنیکل انسٹی ٹیوٹ، ایم ایس ایم اسپتال کے تمام ڈاکٹروں اور اسٹاف کا تہہ دل سے شکریہ ادا کرتے ہیں کہ آپ نے تقریبا تین مہینوں سے شب و روز جو محنت کی ہے ، اس کا حقیقی اجر تو اللہ تعالیٰ ہی دیں گے ، اس کامیاب کانفرنس کے خد و خال کو بنانے سے لے کر اس کو کامیابی کی بلندی تک پہونچانے تک ہر ہر قدم پر آپ کی شبانہ روز محنتیں نمایاں تھیں ۔
تمام اہل پٹنہ کا شکریہ کہ آپ نے میزبانی کا پورا حق ادا کیا ، کانفرنس میں شریک ہونے کے لیے ملک کے طول و عرض سے آنے والی لاکھوں کی بھیڑ کے لیے جس طرح سے آپ نے دیدہ و دل کو فرش راہ کیا اور ان کو سہولت پہونچانے کے لیے جو انتظامات کیے اس کا اعتراف ہر شخص کر رہا ہے اور بہت سے جہاں دیدہ و سرد و گرم چشیدہ لوگوں نے اپنے تاثرات بیان کرتے ہوئے کہا کہ ہم نے ملک کی آزادی کے بعد سے اتنا بڑا منظم اور مہذب مجمع کبھی نہیں دیکھا ۔آپ کی میزبانی کا چرچا ہر خاص و عام کی زبان پر ہے ، اور اس کابہترین اجر خالق کائنات کے ہاتھ میں ہے۔
تمام کمیٹیوں کے ارکان ، کنوینر اور تمام رضا کاروں کا شکریہ کہ آپ نے اپنی بھوک ، پیاس ، گرمی اور تھکن کی پرواہ نہ کی اور مہمانوں کو سہولت پہونچانے ، ان کی خدمت کرنے اور انتظامات کو بحال رکھنے میں لگے رہے ۔آپ میں سے بیشتر گاندھی میدان میں موجود نہیں تھے ، نہ آپ کا نام کہیں تھا ، نہ آپ کی فوٹو کسی اخبار کی زینت بنی ، لیکن یاد رکھئے آپ گھڑی کی اس مشین کی طرح تھے جو سامنے نظر نہیں آتی لیکن اس کے بغیر گھڑی کا کوئی کانٹا ایک قدم نہیں بڑھ سکتا ۔ اللہ تعالیٰ آپ کو اس کا بہتر اجر دے گا اور اس کے رجسٹر میں آپ کا نام اس کانفرنس کی صف اول میں ہوگا۔
حکومت بہار اور پوری پولیس انتظامیہ کا شکریہ کہ آپ کی مستعدی اور بہتر انتظام سے اس کامیاب کانفرنس کے انعقاد میں بڑی مدد ملی ، وزیر اعلیٰ ، ہوم سکریٹری ، پٹنہ کمشنر، ڈی ایم پٹنہ ، سینئر ایس پی ، اے ڈی ایم، پٹنہ اور تمام مضافاتی اضلاع کے تمام ایس پی ،ٹریفک ایس پی اور پوری پولیس ٹیم کا شکریہ کہ انہوں نے تندہی اور چابکدستی کے ساتھ اپنے فرائض انجام دیے اور کانفرنس کی انتظامیہ کے ساتھ تال میل رکھتے ہوئے مجمع کو منظم رکھنے میں اہم کردار ادا کیا ہم اس کا تہ دل سے اعتراف کرتے ہیں اور شکریہ ادا کرتے ہیں ۔
آخر میں ایک بار پھر آپ سب کی خدمت میں شکریہ ادا کرتے ہوئے یہ گذارش کرنا چاہتا ہوں کہ یہ کامیابی ہمارے ذہنوں میں کبر اور غرور پیدا نہ کردے ،اور اللہ سے غافل نہ کردے،یہ ساری کامیابی خدائے وحدہ و لاشریک کی عنایت ہے۔ ہمارے قدموں کو زمین پر ہی ہونا چاہئے ، اور اس کانفرنس سے جو تحریک پیدا ہوئی ہے اور جو انقلاب آیا ہے ، اس تحریک کو آگے بڑھتے رہنا چاہئے ، کسی قسم کی افواہ ، یاچہ میگوئیاں آپ کو اس کانفرنس کے مقاصد کے تئیں غلط فہمی میں مبتلا نہ کریں۔ اللہ تعالیٰ سے دعاہے کہ وہ اس کانفرنس کا بہتر اور دیر پا اثر پیدا کرے اور ہم سب لوگوں کی محنت اور قربانیوں کو قبول کرے،آمین یا رب العالمین!