ناروڈا پاٹیا فسادات:سابق وزیر مایا کوڈنانی بری

ناروڈا پاٹیا فسادات:سابق وزیر مایا کوڈنانی بری

بجرنگی سمیت 18 کو سزا
احمد آباد ،20؍اپریل :ناروڈا پاٹیا فسادات کیس کے اہم ملزم گجرات حکومت کی سابق وزیر ڈاکٹر مایابین کوڈنانی کو ہائی کورٹ نے بری کر دیا، جبکہ وی ایچ پی لیڈر بابو بجرنگی کو مجرم مانتے ہوئے عمر قید کی سزا سنائی ہے۔زیریں عدالت نے کوڈنانی کو 28سال کی قید کی سزا سنائی تھی، جس کے بعد کچھ سال وہ جیل میں رہی۔ادھر وی ایچ پی لیڈر بابو بجرنگی سمیت 12 کو ہائی کورٹ نے قصوروار مانتے ہوئے عمر قید کی سزا برقرار رکھی ہے۔گجرات ہائی کورٹ نے ناروڈا پاٹیا فسادات کیس میں جمعہ کی صبح فیصلہ سناتے ہوئے کہا کہ جائے حادثہ پر ڈاکٹر کوڈنانی کا ہونا ثابت نہیں ہو پایا ہے، 4 پولیس والوں نے بتایا کہ فسادات مقام پر انہوں نے مایابین کو نہیں دیکھا، جبکہ زیریںعدالت نے مانا تھا کہ کوڈنانی نے لوگوں کے گروپ کو مشتعل تقریر سنا کر تشدد کے لئے اکسایا تھا۔ہائی کورٹ نے مایا کوڈنانی کو شک کا فائدہ دینے کے ساتھ ان کے خلاف گواہ اور ثبوتوں کو ناقابل یقین قرار دیتے ہوئے الزامات سے بری کر دیا۔مایابین کے نجی اسسٹنٹ کرپال سنگھ سمیت 17 دیگر کو بری کر دیا لیکن وی ایچ پی لیڈر بابو بجرنگی، پرکاش راٹھوڈ، سریش چھارا کوسازشی اور 15دیگر کو قصوروار مانتے ہوئے ان کی سزا جوں کی توں رکھی ہے۔بجرنگی کو زیریں عدالت نے عمرقید کی سزا سنائی تھی جسے ہائی کورٹ نے کم کرکے 21سال کر دیا۔