سول سروسز کے لئے منتخب ہونے والے امیدواروں کو استقبالیہ

سول سروسز کے لئے منتخب ہونے والے امیدواروں کو استقبالیہ

نئی دہلی:14؍مئی(پریس ریلیز)
زکوٰۃفائونڈیشن آف انڈیا کی جانب سے آج یہاںسول سروسز کے لئے منتخب ہونے والے ان نئے بیو روکریٹس کواستقبالیہ دیاگیا جنھوںنے زکوٰۃ فائونڈیشن آف انڈیا کے سول سروس ٹریننگ پروگرام سے استفادہ کرکے فائونڈیشن کی مدد اور رہنمائی سے سول سروسز امتحان کی تیاری کی اور کامیابی حاصل کی ۔ فائونڈیشن کے زیر کفالت سول سروسز امتحان کی تیاری کرنے والے امیدواروں کو زیڈ ایف آئی فیلو کہاجاتا ہے ۔ ۲۰۱۸ کے نتیجہ میں ۲۹ زیڈ ایف آئی فیلوزمنتخب ہوئے ہیں ۔ یہ اب تک کی سب سے بڑی کامیابی ہے جوزکوٰۃ فائونڈیشن آف انڈیا کو سول سروس ٹریننگ پروگرام میں ملی ہے۔ زیڈایف آئی کی طرف سے گزشتہ دس سال سے یہ سلسلہ چل رہا ہے اور اس مہم میں کامیابی کی شرح لگاتار بڑھتی جارہی ہے۔ اس بار کے امتحان میںکل۵۱ مسلم امیدوار کامیاب ہوئے ہیں ۔ اس طرح مسلم امیدواروں کی شرکت میں اضافہ کے ساتھ ان کی کامیابی کا گراف بھی بڑھتا جارہا ہے۔ زکوٰۃ فائونڈیشن آف انڈیا کے صدر ڈاکٹر سید ظفرمحمود صاحب نے ان خوش گوار نتائج پر تبصرہ کرتے ہوئے کہا کہ یہ اس بیداری کا نتیجہ ہے جو گزشتہ کئی سالوں سے کی جارہی کوششوں سے پیدا ہوئی ہے اور متعدد حلقے اور افراد اس کام کے لئے آگے آئے ہیں اور نوجوانوں کو سول سروس کے امتحان میں شریک ہونے کی ترغیب اور تربیت دے رہے ہیں۔
آج کی اس خصوصی استقبالیہ تقریب میں جس کی صدارت مولانا محمود مدنی کررہے تھے اور جسٹس اقبال انصاری ،جناب سراج حسین ، محترمہ سیدین حمید، آنجہانی جسٹس راجندر سچر کی بیٹی محترمہ مادھوی سچر اور پوتے اکشے بھنڈاری ، ڈاکٹر سید فاروق، وغیرہ ڈائس پر مہمانان خصوصی کی حیثیت سے موجود تھے ، زیڈ ایف آئی صدر نے اپنے مخصوص انداز میں پاور پوائنٹ پریزینٹیشن دیتے ہوئے زکوٰۃ فائونڈیشن کی ابھی تک کی حصولیابیوں پر روشنی ڈالی۔ انھو ں نے حاضرین کو یہ خوشخبری سنائی کہ زکوٰۃ فائونڈیشن آف انڈیا دہلی کے نواح میں جمیعۃ العلماء کے تعاون سے سول سروس اکیڈمی قائم کررہا ہے جس میں ۵۰۰ طلباء و طالبات کو قیام کی سہولت کے ساتھ سول سروس کی تیار ی کے لئے کوچنگ کرائی جائے گی۔ ڈاکٹر ظفر محمود صاحب نے بتایا کہ ابھی تک کے تجربہ سے یہ بات ثابت ہوچکی ہے کہ سو ل سروس امتحان میں کامیاب ہونے والے مسلمانوں کی کم تعداد کا اصل سبب سول سروس امتحان میں مسلمانوں کی کم شرکت ہے ۔ جیسے جیسے شرکت کا تناسب بڑھے گا ، ویسے ویسے کامیابی کا گراف بڑھتا جائے گا۔ انھوں نے بتایا کہ۱۴ اعشاریہ ۲ فیصد آبادی کے لحاظ سے سول سروس میں کامیاب ہونے والے مسلمانوں کی تعداد کم سے کم ۱۵۰ ہونی چاہئے لیکن شرکت کا تناسب کم ہونے کی وجہ سے کامیاب مسلمانوں کی تعداد ابھی تک بہت کم رہی ہے اور صرف ۲ اعشاریہ ۵ فیصد مسلمان بیوروکریسی میں ہیں ۔ جب کہ بیوروکریسی میں موجود لوگ ہی ملک کی حکمرانی میں اصل رول ادا کرتے ہیں اور۹۰ فیصد کام وہی لوگ کرتے ہیں۔ ڈاکٹر ظفر محمود صاحب نے زکوٰۃ فائونڈیشن آف انڈیا کے سرسید کوچنگ اینڈ گائڈنس سینٹر کے نام کی وضاحت کرتے ہوئے حاضرین کو بتایا کہ در اصل سر سید ہی تھے جنھوں نے پہلی بار سول سروسز امتحانات کی تیاری کے لئے نوجوانوں کو منتخب کرنے اور تیاری کرانے کا سلسلہ شروع کیا تھا ۔ ۱۸۸۷ میں سرسید نے سول سروس فنڈ قائم کیا تھا اور ۱۵نوجوانوں کو منتخب کرکے وہ تیاری کے لئے ہر سال برطانیہ بھیجتے تھے۔ اس موقع پر ظفر محمود صاحب نے آنجہانی جسٹس راجندر سچر کو بہت جذباتی انداز میں یاد کیا اور کہا کہ ایسے بے لوث لوگ صدیوں میں پیدا ہوتے ہیں ۔ انھوں نے کہا کہ انہیں ایسا لگتا ہے کہ اپنے والد اور سسرکی وفات کے بعد اب وہ تیسری بار یتیم ہوئے ہیں کیوں کہ آنجہانی جسٹس سچر ان کے لئے سرپرست کی ہی طرح تھے اور زکوٰۃ فائونڈیشن آف انڈیا کے سول سروس فیلی سیٹیشن پروگرام میں وہ ہرسال اس کی شروعات سے ہی شریک ہوتے رہے ہیں ، یہ پہلا موقع ہے جب وہ شریک نہیں ہیں ۔
قبل ازیں پروگرام کی ابتداء میںجسٹس راجندر سچر کو حاضرین نے خراج عقیدت پیش کیا اوران کے تئیںسوگ کا اظہار کیا۔ جمیعۃ العلماء ہند کے جنرل سکریٹری مولانا محمود مدنی نے زکوٰۃ فائونڈیشن انڈیا کے اشتراک سے سول سروس اکیڈمی پروجیکٹ کی تفصیلات سے حاضرین کو واقف کراتے ہوئے بتایا کہ ابھی پہلے مرحلہ کی تیار ی چل رہی ہے اور پہلے مرحلے میں ۱۰۰ امیدواروں کی رہائش اور کوچنگ کا انتظام کیا جائے گا۔ انھوں نے کہا کہ جمعیۃ العلماء اور زکوٰۃ فائونڈیشن ایک ہی مقصد کے لئے کام کررہے ہیں، اس لئے یہ ایک فطری اشتراک ہے اور اس اشتراک عمل کو مستقل طور سے جاری رکھا جائے گا۔
زیڈ ایف آئی سرسید کوچنگ اینڈ گائڈنس سینٹر کے نگراں اور زکوٰۃ فائونڈیشن آف انڈیا کے نائب صدر جناب سراج حسین (سابق سکریٹری حکومت ہند) نے کامیابی حاصل کرنے والے نوجوانوں کو رہنما نصیحتیں دیتے ہوئے انھیں آگاہ کیا کہ عمل کے میدان میں اترنے کے بعد انہیں بہت سی عملی مشکلات کا سامناکرنا پڑسکتا ہے جس میں انہیں ایمانداری اور محنت و صبر و ضبط سے کام لینا ہوگا۔اس موقع پر کامیاب زیڈایف آئی فیلوز کو فیلو شپ سرٹی فکیٹ پیش کئے گئے۔
زکوٰۃ فائونڈیشن آف انڈیا کے نائب صدر ایس ایم شکیل نے زکوٰۃ فائونڈیشن کی خدمات سے لوگوںکو واقف کرایا اور ڈاکٹر سید ظفر محمود صاحب کی صدارت میں قائم انٹرفیتھ کولیشن فار پیس کے سکریٹری فادر پیکئم سیموئل نے انٹر فیتھ کولیشن کا تعارف پیش کیا ۔ اس موقع پر زکوٰۃ فائونڈیشن آف انڈیا کے سکریٹری ممتاز نجمی،ٹریزرار قیام الدین ،ممبر عرفان بیگ اور انٹر فیتھ کولیشن فار پیس کی محترمہ دیپانی بھنوٹ بھی موجود تھیں۔پروگرام کی نظامت محترمہ دیپانی بھنوٹ اور فادر پیکیم سیموئل نے کی۔ مسٹر ممتاز نجمی کے شکریہ کے ساتھ یہ پروگرام اختتام پزیر ہوا۔
سوریہ ہوٹل میں منعقد اس باوقار پروگرام میں حاضرین کو عشائیہ بھی دیا گیا۔ اس موقع پر جاوید چودھری، ایم این اے چودھری، خواجہ شاہد اور عارفہ خانم وغیرہ بھی حاضرین میں موجود تھے۔