اسرائیلی فوج کا روزہ داروں پر تشدد، لوٹ مار، متعدد فلسطینی گرفتار

اسرائیلی فوج کا روزہ داروں پر تشدد، لوٹ مار، متعدد فلسطینی گرفتار

غرب اردن :4؍جون(بی این ایس؍ایجنسی)
فلسطین کے علاقے غزہ کی پٹی میں اسرائیلی فوج نے گھر گھر تلاشی کی کارروائیوں کے دوران فلسطینی روزہ داروں کو ہراں کیا، گھروں میں گھس کر لوٹ مار کی اور متعدد شہریوں کو حراست میں لے لیا گیا۔مرکزاطلاعات فلسطین کے مطابق اسرائیلی فوج کی طرف سے جاری کردہ ایک بیان میں کہا گیا ہے کہ غرب اردن سے یہودی آبادکاروں کی گاڑیوں پر سنگ باری کرنے والے 7 فلسطینیوں کو حراست میں لیا گیا ہے۔مرکزاطلاعات فلسطین کے نامہ نگار کے مطابق اسرائیلی فوج نے الخلیل شہر میں گھر گھر تلاشی کی مہم کے دوران نہتے فلسطینیوں سے ہزاروں شیکل کی نقد رقم اور طلائی زیورات چھین لیے۔غرب اردن کے وسطی شہر رام اللہ میں بیت ریما کے مقام پر اسرائیلی فوج کی کمانڈو یونٹ کے اہلکاروں نے  ایک فلسطینی نوجوان پر تشدد کیا جس کے نتیجے میں وہ زخمی ہوگیا۔قابض فوج نے متیم الریماوی کے گھر پر چھاپہ مارا اور اس کے گھر میں توڑپھوڑ اور لوٹ مار کے بعد اسے نامعلوم مقام پر منتقل کردیا ہے۔اطلاعات کے مطابق بیت الریما قصبے میں اسرائیلی فوج کی تلاشی مہم کے خلاف فلسطینی شہری احتجاج کرتے ہوئے گھروں سے نکل آئے۔ انہوں نےاسرائیلی فوجی ٹرکوں اور یہودی آبادکاروں کی گاڑیوں پر بھی سنگ باری کی۔مقامی ذرائع کا کہنا ہے کہ تلاشی کی مہم کے دوران اسرائیلی فوج نے ڈرون کے ذریعے بھی قابض فوج کی نگرانی کی۔ النبی الصالح کے مقام پر اسرائیلی فوج نے تلاشی کی کارروائیوں کے دوران متعدد فلسطینیوں کو حراست میں لے لیا۔اطلاعات کے مطابق قابض فوج نے الخلیل میں اذنا کے مقام پر تلاشی کے دوران مروان اھدیب، خاراسا سے سمیر حلاحلہ، مغربی الخلیل سے محمود الدویک، نور عاشور، علی القواسمی اور بیت لحم سے چار فلسطینی نوجوانوں کو حراست میں لیا۔