ڈونالڈ ٹرمپ کی جانب سے وائٹ ہاؤس میں افطار عشائیہ

ڈونالڈ ٹرمپ کی جانب سے وائٹ ہاؤس میں افطار عشائیہ

واشنگٹن ،7جون(یو این آئی)امریکہ کے صدر ڈونالڈ ٹرمپ نے پہلی بار وائٹ ہاؤس میں مسلمانوں کے اعزاز میں افطار عشائیےکا اہتمام کیا۔
تقریب میں امریکی صدر ٹرمپ اور سعودی سفیر شہزادہ خالد بن سلمان ایک ساتھ ٹیبل پر موجود تھے۔دعوت افطار میں عرب امارات، اردن، مصر، تیونس، عراق، قطر، بحرین، مراکش، الجزائر اور لیبیا کے سفیروں کو بھی مدعو کیا گیا تھا۔
غیر ملکی میڈیا رپورٹوں کے مطابق صدر ڈونالڈ ٹرمپ کے وائٹ ہاؤس میں پہلے افطار عشائیہ میں امریکی وزرا اور اعلیٰ حکام بھی شامل تھے، تقریب سے خطاب میں ڈونلڈ ٹرمپ نے حاضرین اور دنیا بھر کےمسلمانوں کو ماہ صیام کی مبارک باد پیش کی۔
ان کا کہنا تھا کہ آپ سب حاضرین اور دنیا بھرکے مسلمانوں کو رمضان مبارک ہو، آج کی شام اس تقریب میں ہم سب دنیا کے عظیم ترین مذہب کی ایک مقدس روایت کا اہتمام کر رہے ہیں۔
امریکی صدر نے کہا کہ مسلمان پورے دن پر محیط روزے کے اختتام پر افطار کرتے ہیں جو ماہ مبارکرمضان بھر کے دوران روحانیت کی عکاسی کرتا ہے۔
صدر ٹرمپ کے اس افطار عشائیے کا مسلمانوں کی تنظیم کونسل آن امریکن اسلامک ریلیشنز اور کئی مسلم تنظیموں نے بائیکاٹ کیا۔
انہوں نے امریکی صدر کی مسلم مخالف پالیسیوں کے خلاف وائٹ ہاؤس کے باہر احتجاجاً افطار بھی کیا۔