آئیے! ہم سب عہد کرتے ہیں….!

آئیے! ہم سب عہد کرتے ہیں….!

مظفر احسن رحمانی
مسجد اللہ کا گھر ہے ، جہاں ایک دکھا دل انسان اپنی فریاد لے کر جا تا ہے اور کامیاب و بامراد واپس ہوتا ہے ، وہ ایسا دربار ہے جہاں سے کوئی مایوس واپس نہیں آتا ، جب گناہوں سے لت پت شخص اس احساس کے ساتھ کہ وہی بخشنے والا اور معاف کرنے والا ہے اور پھر کہتا ہے
الہا! میں اقراری مجرم ہوں ،مجھ سے گناہ ہوئے ہیں ، یقینا میں سزا کا مستحق ہوں ،میں تیرے آخری پہر میں تیرے آستانے پر اس امید کے ساتھ آیا ہوں کہ تو بہت معاف کرنے والا اور بخشنے والا ہے، تیرا نام رحمن ورحیم ہے ،تونے تو نہ جانے کیسے کیسوں کو معاف کیا ہے ،الہا میں بھی تیری چوکھٹ پر اپنی پیشانی رگڑ کر تجھ سے معافی کا طلب گار ہوں
اللہ ایسے بندوں سے خوش ہوتا ہے اور فرشتوں کو گواہ بناکر کہتا ہے کہ اے فرشتو! گواہ رہنا میں نے اپنے اس بندے کے توبہ کو قبول کیا اور معاف کیا
آئیے ہم تھوڑی دیر رک کر سوچتے ہیں ،کہ جس گھر میں ہم فریادی بن کر جاتے ہیں ،اس گھر (مسجد ) کے نظام میں معاون ہیں یا نہیں ؟اگر آپ کا جواب ہاں میں ہے تو آپ خوش نصیب اور خوش بخت ہیں اور اگر آپ کا جواب نہیں میں ہے تو اس کا مطلب یہ ہیکہ ہم ایک بڑی نیکی سے محروم ہیں اور وہ کام جو آپ کی گویا ذمہ داری میں شامل ہے اس سے غافل ہیں ،
آپ اسے اس طرح دیکھ سکتے ہیں کہ جیسے ہی آپ اللہ کے گھر میں داخل ہوتے ہیں تو ضروت اور حاجت سے فارغ ہونے کے لئے سہولت سے آراستہ ضرورت خانہ موجود ہے ،وہاں سے فارغ ہوتے ہی وضوخانہ میں آکر وضو کرتے ہیں جہاں گرمی سردی اور بارش سے بچنے کے لئے شیڈ کے ساتھ پانی موجود ہے قالین بچھا ہوا جائےنماز کے ساتھ گرمی سے بچنے کے لئے پنکھے ،کولر اور اب تو اے سی کی سہولت اللہ نے کردیا ہے ،وقت ہوتے ہی خوبصورت آواز میں اذان دینے کے لئے موذن صاحب اور نماز پڑھانے کے خوش گلو ،امام محترم موجود ہیں ،
تھوڑا ٹہر کر سوچئے اس نظام کو بہتر سے بہتر تر کرنے کے لئے اخراجات درکار ہونگے ،اگر ہاں تو اس نظام کو منظم چلانے کے لئے ہمیں آگے بڑھ کر رب کی رضامندی حاصل کرنے کی کوشش کرنی چاہئے
آئیے ہم سب عہد کرتے ہیں کہ کل جمعہ کے موقعہ سے مسجد میں ہم اتنی رقم دے دیں کہ دیگر رقوم کے ساتھ ایک ماہ کے خرچ کا انتظام ہوجائے، خدا آپ کی دی ہوئی رقم کو قبول ومقبول فرمائے
مظفر رحمانی
ایڈیٹر بصیرت آن لائن
۹/اگست ۲۰۱۸
بروز جمعرات

۷۹۹۱۱۳۵۳۸۹