ہندوستان

مودی کی لمبی تقریر میں مزدوروں اورکسانوں کے لیے ایک لفظ نہیں،رندیپ سرجیوالانے کہا،کم از کم آمدنی منصوبہ لاگوکیاجائے،کسانوں کی قرض معافی ضروری

پانی پت25مارچ(بی این ایس )
وزیراعظم نریندر مودی کے 21 دن تک کل لاک ڈاؤن کے اعلان پر انگریس کے ترجمان رندیپ سنگھ سرجیوالا نے سوال کھڑے کیے ہیں۔ انہوں نے کہاہے کہ مودی نے وائرس بسے لڑنے کے لیے 50 منٹ توتقریر کر دی لیکن روزکمانے-کھانے والوں کی روزی روٹی کے لیے ایک لفظ نہیں کہا۔ 21 دن یہ اپنے خاندانوں کاپیٹ کس طرح پالیں گے؟ انہوں نے راہل گاندھی کی مجوزہ کم از کم آمدنی منصوبہ بندی کو لاگوکرنے کی مانگ بھی رکھی۔انھوں نے کہاہے کہ یہ منصوبہ وقت کامطالبہ ہے۔پی ایم ہر جن دھن اکاؤنٹ، کسان اکاؤنٹ اور پنشن اکاؤنٹ میں 7500 روپے جمع کروائیں،تاکہ غریب ان 21 دنوں میں دوجون کی روٹی جٹا سکے۔رندیپ سرجیوالانے کہاہے کہ کسان ملک کاپیٹ پالتاہے۔ دوتہائی آبادی کھیتی کرتی ہے۔ پی ایم نے ایک لفظ کسانوں کے لیے نہیں کہا۔ اگلے ہفتے سے کھڑی فصل کٹنے کے لیے تیارہے۔ فصل کس طرح کٹے گی۔ کس طرح بازارمیں آئے گی۔ مناسب قیمت کون دے گا؟ آپ کے فرمان سے کسان پر کیا بیتے گی۔ آپ نے سوچا؟ فوری طور پر ریلیف دیں۔ اس کے لیے کسانوں کی قرض معافی ہی واحد راستہ بھی ہے اوراقدام بھی۔ کسانوں کی قرض وصولی فوری بندکریں۔ فصلوں کے مناسب داموں میںخرید کامکمل انتظام کریں۔نہ بھولنا،کسان معیشت کی ریڑھ کی ہڈی ہے۔

Tags
Back to top button
Close

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker