ہندوستان

پارلیمنٹ ہاؤس کے تعمیر منصوبے کو منسوخ کیا جائے: یچوری

نئی دہلی،26؍مارچ ( بی این ایس )
سی پی ایم کے جنرل سکریٹری سیتا رام یچوری نے ملک میں کرونا وائرس کے بحران کو دیکھتے ہوئے 20 ہزار کروڑ روپے کی لاگت سے پارلیمنٹ ہاؤس کے دوبارہ ترقی کے منصوبہ کو غیر ضروری بتاتے ہوئے حکومت سے اسے منسوخ کرنے کا مطالبہ کیا ہے۔ یچوری نے جمعرات کو ٹویٹ کر کہا کہ یہ انتہائی شرمناک ہے کہ بحران کی اس گھڑی میں حکومت نے پارلیمنٹ کی نئی عمارت اور نیا وزیر اعظم کی رہائش بنانے کے لئے 20 ہزار کروڑ روپے کی رقم مختص کی ہے۔ مرکزی وسٹا ترقی منصوبہ کو منسوخ کیا جانا چاہیے اور اس کے لیے جاری رقم کو کرونا وائرس سے متاثر ہوئے غریبوں کی مدد پر خرچ کیا جائے۔ قابل ذکر ہے کہ حکومت نے گزشتہ ہفتے ہی لٹین دہلی میں واقع مرکزی وسٹا علاقے کی دوبارہ ترقی کے لئے 86 ایکڑ زمین کی نوٹیفکیشن جاری کی ہے۔ اس کے تحت پارلیمنٹ کی عمارت، وزیر اعظم کی رہائش، اور نائب صدر بھون کے علاوہ مرکزی سیکرٹریٹ کی نئی عمارت بنانے کی تجویز ہے۔ اس دوران سی پی ایم نے بھی صحت اور طبی نظام کو مضبوط کرنے کے لیے مختص فنڈ میں اضافے کا حوالہ دیتے ہوئے حکومت سے مطالبہ کیا ہے کہ کرونا وائرس سے متاثر مریضوں کا نجی اسپتالوں میں بھی بلا معاوضہ علاج کرانے کا اعلان کیا جائے۔ اس کے لیے پارٹی نے حکومت کی طرف سے اعلان فنڈ سے نجی اسپتالوں کو بلا معاوضہ علاج کے اخراجات کی تلافی کرنے کا مشورہ دیا ہے۔

Tags
Back to top button
Close

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker