ہندوستان

اجیت ڈوبھال کوتبلیغی مرکزکس نے بھیجا؟’’خفیہ ملاقات‘‘میں کیابات ہوئی؟ مہاراشٹرکے وزیرداخلہ نے پروگرام کے لیے مرکزی وزارت داخلہ کوذمے داربتایا

ممبئی8اپریل(بی این ایس )
مہاراشٹرکے وزیرداخلہ انیل دیشمکھ نے بدھ کے روزدہلی میں منعقدہ تبلیغی جماعت کے پروگرام پر مرکز کو نشانہ بناتے ہوئے سوال کیاہے کہ کیا یہ مذہبی پروگرام کورونا وائرس کے انفیکشن کا سبب بن سکتا ہے۔اس کے لیے مرکزی وزارت داخلہ کو ذمہ دار کیوں نہیں ٹھہرایا جانا چاہیے؟دیشمکھ نے یہ بھی الزام لگایا کہ قومی سلامتی کے مشیر (این ایس اے) اجیت ڈوبھال نے جب یہ پروگرام منعقد ہوا تھا تو رات کے دو بجے جماعت کے رہنما مولانا سعد سے ملاقات کی تھی۔اس نے ان دونوں کے مابین ہونے والی خفیہ گفتگوکی نوعیت پر سوال اٹھایا۔دیشمکھ نے یہ بھی پوچھ گچھ کی کہ ڈوبھال کو رات کو مولاناسعد سے ملنے کے لیے کس نے بھیجا تھا۔انہوں نے پوچھا ہے کہ کیا جماعت کے ممبران یا دہلی پولیس کمشنر سے رابطہ کرنا این ایس اے کاکام تھا؟این سی پی کے سینئر لیڈرنے آٹھ سوالات اٹھائے ، مرکزی حکومت پر تبلیغی جماعت کو مذہبی پروگرام منعقد کرنے کی اجازت دینے کا الزام عائد کرتے ہوئے کہاہے کہ حکومت کے جماعت کے ساتھ تعلقات ہیں۔انہوں نے کہا کہ مرکز کے قریب نظام الدین پولیس اسٹیشن کے باوجودپروگرام کونہیں روکا گیا۔دیشمکھ نے سوال کیا ہے کہ مرکزی وزارت داخلہ نے دہلی میں نظام الدین میں تبلیغی جماعت کے اجتماع کے انعقاد کی اجازت کیوں دی؟انہوں نے پوچھا ہے کہ کیا مرکزی وزارت داخلہ اس پیمانے پر لوگوں کو مرکز میں جمع کرنے اور پھر تمام ریاستوں میں کورونا وائرس کے پھیلاؤکے لیے ذمہ دارنہیں ہے؟جب این ایس اے اور مولانا سعد کے مابین ہونے والی خفیہ گفتگوکے بارے میں پوچھاگیاتو دیش مکھ نے کہاہے کہ این ایس اے نے دو بجے دیر رات کومرکز کس نے اور کیوں بھیجا؟کیا یہ این ایس اے ہے یادہلی پولیس کمشنر؟ انہوں نے یہ بھی جاننے کی کوشش کی کہ ڈوبھال اور دہلی پولیس کمشنر ایس این سریواستونے اس معاملے پربات کیوں نہیں کی۔دیشمکھ نے پوچھا ہے کہ ڈوبھال سے ملاقات کے اگلے دن مولانا سعد کہاں سے فرار ہوگئے؟اب وہ(مولانا) کہاں ہیں؟ ان (جماعت کے ممبروں) سے کس کا واسطہ ہے؟ “دیشمکھ نے مرکز پر تبلیغی جماعت سے روابط رکھنے کا الزام عائد کیا اورپوچھا کہ ان کے ذریعہ اٹھائے گئے سوالات کا جواب کون دے گا۔یہ بات قابل ذکر ہے کہ این سی پی کے سربراہ شرد پوار نے پیر کو سوال کیا کہ نظام الدین ،نئی دہلی میں تبلیغی جماعت کے مذہبی پروگرام کی اجازت کس نے دی؟

Tags
Back to top button
Close

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker