اخبارجہاں

نیپال نے جاری کیا ملک کا نیا نقشہ، لپولیکھ، کالاپانی اور لمپیادھورا کو بتایا اپنا

آن لائن نیوزڈیسک
ہندوستان حکومت کی مخالفت کے بعد بھی نیپال حکومت نے اپنے ملک کا نیا سیاسی اور انتظامی نقشہ جاری کر دیا ہے۔اس نئے نقشے میں نیپال نے لپولیکھ، کالاپانی اور لمپیادھورا کے کل 335 مربع کلومیٹر کے علاقے کو اپنا بتایا ہے۔نیپال کی زمینی انتظامیہ اور اصلاحات کی وزارت کی جانب سے وزیر پدما اریال نے نیپال کا یہ نیا نقشہ جاری کیا۔اس سے پہلے نیپال حکومت نے اعلان کیا تھا کہ وہ نیا نقشہ جاری کرکے لپولیکھ، کالاپانی اور لمپیادھرا کو اپنے علاقے میں شامل کرے گی۔اس نقشے کو اب اسکولوں اور تمام سرکاری دفاتر میں استعمال کیا جائے گا۔پدما نے کہا کہ نئے نقشے کو پارلیمنٹ کے سامنے رکھا جائے گا تاکہ اس میں کی گئی ترمیم کو منظوری دلائی جا سکے۔نیپال نے اپنے نئے نقشے میں کل 335 مربع کلومیٹر کے علاقے کو شامل کیا ہے۔لپویادھرا، لپولیکھ اور کالاپانی کے علاوہ گجی، نابھی اور کٹی دیہات کو بھی شامل کیا گیا ہے۔اس سے پہلے پیر کو وزیر اعظم کے پی شرما ولی کی قیادت میں کابینہ کے اجلاس کے دوران اس نقشہ کی منظوری دی گئی تھی۔اس کے مطابق، لمپیادھرا، لپولیکھ اور کالاپانی کو نیپال کا حصہ بتایا تھا جبکہ یہ علاقے ہندوستان میں آتے ہیں۔نیپالی کابینہ سے نئے نقشے کی تجویز کو منظوری ملنے کے بعد نیپال کے صدر بدیا دیوی بھنڈاری نے کہا تھاکہ لمپیادھرا، لپولیکھ اور کالاپانی علاقے نیپال میں آتے ہیں اور ان علاقوں کو واپس حاصل کرنے کے لئے مضبوط سفارتی اقدامات کئے جائیں گے۔ منگل کو وزیر اعظم کے پی شرما اولی نے پارلیمنٹ میں کہا تھا کہ کالاپانی، لمپیادھرا اور لپولیکھ ہمارا ہے اور ہم اسے واپس لے کر رہیں گے۔

Tags
Back to top button
Close

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker