ہندوستان

جانا تھا جاپان پہنچ گئے چین،ممبئی کے وسئی اسٹیشن سے نکلی ورکرز ٹرین کو یوپی جانا تھا لیکن ٹرین پہنچی راورکیلا

نئی دہلی،23مئی (بی این ایس )
لاک ڈاؤن کی وجہ سے ملک میں جہاںتہاں پھنسے تارک وطن کارکنان کو ان کے گھر تک پہنچانے کے لیے ورکرزخصوصی ٹرینیں چلا رئی جارہی ہیں لیکن ممبئی سے روانہ ہوئی وسائی روڈ گورکھپور ورکرز اسپیشل ٹرین میں سفر کر رہے مسافروں کے لئے اپنوں کے پاس پہنچنے کا انتظار طویل ہو گیا ہے۔21 مئی کو ممبئی سے گورکھپور کے لئے روانہ ہوئی اس ٹرین کوچھوٹے روٹ سے گزرنا تھا لیکن ریلوے نے اس کا روٹ تبدیل کرکے اسے کافی طویل کر دیا اور یہ ٹرین 8 ریاستوں کا چکر کاٹ کر اڑیسہ کے راورکیلا پہنچ گئی۔مغربی ریلوے نے ایک بیان میں بتایا کہ 21 مئی کو روانہ ہوئی وسائی روڈ گورکھپور ورکرز اسپیشل ٹرین کے روٹ میں تبدیلی کی گئی ہے۔بیان کے مطابق ٹرین کے موجودہ روٹ میں بھاری ٹریفک کی وجہ سے یہ تبدیلی کی گئی ہے۔اس ٹرین کو کلیان، بھساول، کھنڈوا، اٹارسی، جبل پور، نینی، دین دیال اپادھیائے جنکشن ہوتے ہوئے گورکھپور پہنچنا تھا۔یہ اس کا سب سے چھوٹا راستہ تو نہیں ہے، لیکن ریلوے نے جو فیصلہ کیا، اسی کے حساب سے چلے گی۔اس حساب سے اسے تین ریاستوں سے گزرنا تھا لیکن اب اس کا روٹ تبدیل کر دیا گیا ہے،اب یہ ٹرین اپنی منزل تک پہنچنے کے لئے 8 ریاستوں کا چکر کاٹے گی۔ریلوے کا کہنا ہے کہ اٹارسی-جبل پور-پنڈت دین دیال اپادھیائے شہرروٹ پر بڑی تعداد میں ورکرز خصوصی ٹرینوں کے چلنے کی وجہ سے بھاری ٹریفک ہے، اس لئے ریلوے بورڈ نے مغربی ریلوے کے وسائی روڈ، سورت، ولساڈ، انکلیشور، کونکن ریلوے اور سنٹرل ریلوے کے کچھ اسٹیشنوں سے چلنے والی ٹرینوں کو فی الحال بلاسپور-جھارسوگڈا-راورکیلا کے راستے چلانے کا فیصلہ کیا ہے۔اس بارے میں ریلوے کا کوئی افسر کچھ بھی کہنے کو تیار نہیں ہے۔ماہرین کا کہنا ہے کہ ریلوے اپنی غلطی کو چھپانے کے لئے بہانے بنا رہا ہے۔لاک ڈاؤن کی وجہ سے ملک میں ریل سروس معطل ہے۔عام دنوں میں روز اوسطا 11000 گاڑیاں چلتی ہیں جبکہ اب تو محض چند سو ٹرینیں ہی چل رہی ہیں، اس لئے کسی بھی روٹ پربھاری ٹریفک کا سوال ہی پیدا نہیں ہوتا۔

Tags
Back to top button
Close

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker