ہندوستان

ریاستی حکومت مزدوروں کے مفادات کے تحفظ کے لئے سنجیدہ ہو، رکسول میں منعقد کانگریس کارکنان کے دھرنے میں حکومت سے کئے گئے کئی مطالبے

رکسول ۔4/ جون ( محمد سیف اللہ)

ہم نے کرونا کی جنگ میں ایک ذمہ دار شہری کی حیثیت سے ہمیشہ ریاستی حکومت کا ساتھ دیا ہے اور اس وبا کے خاتمے کے لئے پہلے دن سے ہی ان کے قدم سے قدم ملا کر کھڑے رہے ہیں؛ مگر اس بھیانک صورت حال میں ریاستی حکومت کی جانب سے مزدوروں کے استحصال کا جو سلسلہ جاری ہے اسے دیکھ کر خاموش نہیں رہا جا سکتا،اس لئے کانگریس پارٹی کے ارکان آج علامتی دھرنے پر بیٹھ کر حکومت کے کام کاج کے تعلق سے عدم اطمینان کا اظہار کر رہے ہیں، یہ باتیں آج ہند نیپال کی سرحد پر واقع رکسول میں کانگریس پارٹی کے رکسول سب ڈویژن حلقہ کے ارکان کی جانب سے منعقد اہم دھرنے میں رکسول کانگریس صدر رام بابو یادو نے کہیں، انہوں نے اپنی رہائش گاہ پر منعقد دھرنے میں شامل ارکان سے کہا کہ آپ نے کرونا سے جاری جنگ میں لاک ڈاون کے دوران عوامی مفادات کے تحفظ کے لئے جو اقدامات کئے وہ قابل رشک ہیں اور میں سمجھتا ہوں کہ سماج میں اس کا مثبت پیغام جائے گا،انہوں نے کہا کہ بہار کے مہاجر مزدوروں کی گھر واپسی کے بعد ریاستی حکومت ان کے ساتھ جس طرح کا برتاو کر رہی ہے وہ افسوسناک ہے؛ اس لئے ہمیں سماج کے ایک ایک فرد تک پہنچ کر حکومت کی ناکامیوں کو اجاگر کرنا ہوگا؛ تاکہ آنے والے دنوں میں یہاں کی عوام کسی بہکاوے میں آکر دھوکہ کھانے سے محفوظ رہ سکے،انہوں نے کہا کہ حکومت نے بڑے بڑے وعدے کئے؛ مگر اس کے باوجود کرونٹین سینٹر میں مزدروں کے ساتھ جس طرح کا رویہ اپنایا گیا اس نے پورے سماج کو شرمندہ کر دیا ہے،انہوں نے کہا کہ گھر لوٹے مزدوروں کے مستقبل کے لئے نہ تو حکومت سنجیدہ ہے اور نہ ہی ان کے پاس ایسی کوئی پالیسی ہے جس پر اطمینان کا اظہار کر سکے اس لئے کانگریس یہ مطالبہ کرتی ہے کہ اگلے چھ ماہ تک حکومت ہر مزدود کے کھاتے میں ماہانہ ساڑھے سات ہزار ڈالنے، منریگا کے کاموں میں مزدوروں کے لئے روزگار کے اسباب نکالنے،بجلی کا بل معاف کرنے،لاک ڈاون میں بھوک سے مرنے اور گھر واپسی کے دوران راستے میں دم توڑ دینے والے مزدوروں کو معاوضہ سمیت نوکری دینے اور چھوٹے تاجروں کے لئے مناسب سہولیات مہیا کرانےکا انتظام کرے اس موقع پر دھورپ شرما،انصارالحق،دیپک کمار گپتا،مہاویر گیری،سنجے شکلا،سورج مہتو اور جوگی مہتو سمیت سینکڑوں کانگریسی کارکنان موجود رہے اور انہوں نے بھی اس بابت اپنی اپنی رائے رکھی،دھورپ شرما نے کہا لاک ڈاون میں مہاجر مزدروں کو جن مشکلات سے گزرنا پڑا وہ یقینا تکلیف دہ ہے مگر ہم چاہیں گے کہ حکومت ان کے مستقبل کو خوشگوار بنانے کی سمت میں مناسب قدم بڑھائے، انصارر الحق نے کہا کہ مزدوروں کے مفادات کو نظر انداز کرکے خوشحال سماج کی تشکیل کو یقینی نہیں بنایا جاسکتا اس لئے سرکار کو مزدوروں کے مسائل کے فوری حل کے لئے سامنے آنا چاہئے،دیپک کمار گپتا نے کہا کہ سرکاری سطح پر مزدوروں کو جو سہولیات فراہم کرنے کی بات کی جارہی ہے ان کے متعلق یہ بھی تحقیق ہونی چاہئے کہ ان کا فائدہ مزدوروں کو مل رہا ہے یا نہیں، سورج مہتو نے کہا کہ مزدور کسی سماج کے لئے ریڑھ کی ہڈی کی حیثیت رکھتا ہے ایسی صورت حال میں سرکار کی یہ ذمہ داری ہے کہ وہ ان کے حقوق کے تحفظ کے لئے جوابدہ ہو۔

Back to top button
Close

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker