ہندوستان

ارئی گاوں میں 2 فرقوں کے مابین پرتشدد جھڑپ ،8 افراد زخمی ،13 ملزمین گرفتار ،جیل رسید

جالے:6؍جون(رفیع ساگر؍بی این ایس) سمری تھانہ کے ارئی گاؤں میں 2 فرقوں کے مابین ہوئی پر تشدد جھڑپ میں 8 افراد زخمی ہوگئے جن کے بعد پولیس نے گاوں میں اپنی نقل و حرکت تیز کردی ہے۔ اس معاملے میں پولیس نے 13 ملزمین کو گرفتار کر عدالتی حراست میں جیل رسید کر دیا ہے۔ معلوم ہو کہ جمعہ کی شب آم کے باغ کی نگرانی کو لیکر پیدا ہوئے تنازع میں دونوں فرقوں نے ایک دوسرے پر دھاردار ہتھیار سے حملہ کر دیا جس میں پھول بابو ، صداقت حسین ، روشن سہنی کو شدید طور پر مجروح ہونے کے بعد سنگین حالت میں ڈی ایم سی ایچ ریفر کردیا گیا۔ صدر ڈی ایس پی انوج کمار ، ٹریفک ڈی ایس پی برجو پاسوان ، تھانہ صدر ہری کشور یادو پولیس اہلکاروں کے ساتھ موقع پر پہونچ کر حالات کو قابو میں کئے۔ادھر گاوں میں پولیس کیمپ کے ساتھ گشتی تیز کر دی گئی ہے اور دونوں فرقوں سے گرفتار محمد اصغر ، اختر حسین ، محمد اعظم ، محمد علی رضا ، محمد اشرف، محمد ارمان، بچو سہنی، دینیش سہنی، لال منی دیوی کو علاج کے بعد عدالتی حراست میں جیل بھیج دیا گیا ہے۔ اس واقعہ کو لیکر دونوں طرف سے تھانہ میں تحریری درخواست دیکر ایف آئی آر درج کرائی گئی ہے۔ محمد اختر کی جانب سے درج ایف آئی آر 20/215 میں پھولیشور سہنی،بچو سہنی عرف راجو سہنی،کیلاش سہنی ،ونود سہنی،اپندر سہنی، روشن سہنی، سوشیلا دیوی، لال منی دیوی، پردیشی سہنی، دینیش سہنی، راکیش سہنی،سودیش سہنی، اجئے سہنی، سنگھیشور سہنی، جدو سہنی، سکندر سہنی، راج کمار سہنی سمیت نامعلوم لوگوں پر الزام عائد کرتے ہوئے کہا گیا ہیکہ یہ لوگ مسہری گاچھی میں آم کی نگرانی کے دوران نشے کی حالت میں جان مارنے کی نیت سے آیا اور بھالا ،گراسہ ، تلوار سے حملہ کر زخمی کرنے کے علاوہ آم کے باغ سے آم کو لوٹ لیا۔ نیز انہوں نے دھمکی بھی دی کہ آم کے درختوں کو موقع ملتے ہی کاٹ دینگے۔ وہیں دوسری جانب سے لال منی کے ذریعہ درج ایف آئی آر 20/116 میں کہا گیا ہیکہ جمعہ کی شب ہم اپنے محلے کی خواتین کے ساتھ اجابت کیلئے آم کے باغ کی طرف گئے تھے تبھی گھات لگاکر بیٹھے منظر عالم ،مہتاب عالم، محمد عربی، محمد اختر ، سونو نے چھیڑ چھاڑ کر ہمارے ساتھ آبرو ریزی کرنے کی کوشش کی اور دھکا مکی کے دوران لال منی دیوی و سوشیلا دیوی کو نیم برہنہ کر دیا۔ادھر شورغل سنتے ہی محمد اصغر ، محمد صدام، محمد منٹو، اجالے، نرالے، محمد سجاد، محمد معراج، محمد صداقت، محمد لڈو، محمد اکبر، محمد سراجی،علی رضا،محمد عباس، محمد ارمان، محمد اعظم سمیت دیگر لوگوں نے گھر میں رکھے بکس ، زیورات، سامان ،کپڑے سمیت روپیہ لیکر بھاگ گئے۔ ادھر واقعہ کے متعلق پوچھنے پر تھانہ صدر ہری کشور یادو نے بتایا کہ دونوں گروہوں کی جانب سے ایف آئی آر درج کرنے کے بعد اس پر فوری کارروائی کرتے ہوئے گرفتار کل 13 افراد کو عدالتی تحویل میں جیل بھیج دیا گیا ہے وہیں دیگر ملزمین کی گرفتاری کیلئے لگاتار چھاپہ ماری جاری ہے۔ کیس کی مزید تحقیقات کی ذمہ داری معاون داروغہ اودھ کمار یادو کو سونپی گئی ہے اور تقریباً 2 درجن افراد کے خلاف آئی پی سی کی دفعہ 107 کے تحت کارروائی کی شروع کردی گئی ہے۔

Tags
Back to top button
Close

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker