ہندوستان

مرکزی حکومت نے سپریم کورٹ میں حلف نامہ داخل کیا، مزدوروں کے لیے ٹرینیں چلائی گئیں، مفت کھانا ، ادویات، کپڑے اور چپلیں دی گئیں

نئی دہلی6جون(بی این ایس )
مرکزی حکومت نے تارکین وطن مزدوروں کے معاملے میں ہفتہ کے روز سپریم کورٹ میں ایک حلف نامہ داخل کیا۔ اس میں حکومت نے کہاہے کہ مزدوروں کو گھروں تک لے جانے کے لیے خصوصی ٹرینیں چلائی گئیں۔ بہت سی ریاستی حکومتوں نے بسیں مہیاکیں۔ مزدوروں کو مفت کھانا ، پانی ، دوائیں ، کپڑے ، چپل اور دیگر ضروری چیزیں فراہم کی گئیں۔ این ایچ اے آئی کی مددسے سڑک پر چلنے والے مزدوروں کو ان کے گھر لے جایا گیا۔لیکن اس نے یہ نہیں بتایاکہ ٹرین کی بے انتہائی تاخیرسے چلنے اوربدانتظامی اوربھوک سے کتنے لوگ پریشان رہے اورکتنے لوگوں کی جانیں گئی ہیں۔حکومت نے حلف نامے میں یہ بھی کہا ہے کہ ریاستی حکومتیں اور ریلوے مزدوروں کو مفت کھانا اور پانی مہیا کرتے ہیں۔یکم جون تک ، ریلوے نے متعلقہ ریاستی حکومتوں کی فراہم کردہ سہولیات کو چھوڑ کر ، 1.63 کروڑ فوڈ پیکٹ اور 2.10 کروڑ سے زیادہ پانی کی بوتلیں تقسیم کی ہیں۔مرکزی حکومت نے کہاہے کہ متعدد ریاستی حکومتوں نے پیدل چلنے والے م زدوروں کو روکنے کے انتظامات بھی کیے۔ مختلف مقامات پرکیمپ لگائے گئے جہاں مزدوروں کو رہنے ، کھانے پینے کی اجازت تھی۔اس سے قبل 5 جون کومزدوروں کے معاملے پر سپریم کورٹ میں سماعت ہوئی تھی۔ عدالت نے مرکزی حکومت سے اگلے 15 دنوں میں مزدوروں کو ان کے گھروں تک لے جانے کوکہاہے۔ عدالت نے ریاستی حکومتوں سے کہاہے کہ وہ تمام تارکین وطن مزدوروں کے لیے روزگار کے انتظامات کویقینی بنائیں۔عدالت نے مرکز اور ریاستوں کی تمام درخواستوں پرسماعت کے بعد اپنا فیصلہ محفوظ کرلیا۔ اب منگل 9 جون کواس معاملے میں فیصلہ آنا ہے۔

Tags
Back to top button
Close

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker