ہندوستان

مولانا رفیق احمدکے سانحہ وفات پر علماء نے کیا اظہار تعزیت،جماعت اسلامی کے سکریٹری مولانا مرحوم کا انتقال ملک وملت کے لئے ناقابل تلافی نقصان

دیوبند،6؍ جون(سمیر چودھری؍بی این ایس)
جماعت اسلامی ہند کے جنرل سکریٹری مولانا رفیق احمد کے سانحہ ارتحال پر دیوبند کی دینی ومذہبی شخصیات نے گہرے رنج وغم کا اظہار کرتے ہوئے پسماندگان کو تعزیت مسنونہ پیش کی ہے۔ دارالعلوم وقف دیوبند کے مہتمم مولانا محمدسفیان قاسمی نے مولانا رفیق احمدؒ کے کی وفات کو امت مسلمہ اور ملک وملت کے لئے ناقابل تلافی نقصان بتایا۔ انہوں نے کہا کہ مولانا مرحوم جماعت اسلامی کے ساتھ اخلاص، دیانت اور امانت کے ساتھ وابستہ رہے۔ انہوں نے کہا کہ مولانا رفیق احمدؒ ایک منفرد انداز کلام والے شخص تھے، ان کے حسن اخلاص سے مجبور ہوکر اغیار واجانب بھی ان کی اس صفت حمیدہ کے معترف نظر آتے تھے۔انہوں نے کہا کہ دارالعلوم وقف دیوبند کے جملہ واراکین نے مرحوم ومغفور کے لئے ایصال ثواب اوردعائے مغفرت کی۔ مولانا سفیان قاسمی نے کہا کہ ہم تمام اہل خاندان و اہل تعلق کی خدمت میں تعزیت مسنونہ پیش کرتے ہیں اور اس صبر آزما وقت میں ان کے غم میں برابر کے شریک ہیں۔ دارالعلوم وقف دیوبند کے شیخ الحدیث مولانا
سید احمد خضر شاہ مسعودی نے اپنے تعزیتی پیغام میں کہا کہ جماعت اسلامی ہند کے سابق جنرل سکریٹری مولانا رفیق احمد قاسمیؒ مرحوم جہاں دارالعلوم دیوبند کے ممتاز فاضل تھے وہیں متین، سنجیدہ اور سلجھے ہوئے مزاج کے انسان بھی تھے، یہی وجہ ہے کہ ان کے حادثہ وفات کو دیوبند میں بھی شدت سے محسوس کیاگیا۔ انہوں نے کہا کہ مولانا مرحوم ایک سلجھے ہوئے بااخلاق انسان تھے ، اعتدال اور میانہ روی ان کی فطرت کا حصہ تھا۔ معروف عالم دین مولانا ندیم الواجدی،دارالعلوم وقف کے استاذ مولانا نسیم اختر شاہ قیصر نے کہا کہ مولانا مرحوم باوقار شخصیت کے مالک تھے ان کے مزاج اور طبیعت کی خوبیوں نے انہیں نمایا کیا، انہیں دیوبند سے نسبت تھی اور انہوں نے اس نسبت کا ہمیشہ خیال رکھا، ان سے جب بھی ملاقات ہوتی تو وہ ہمیشہ محبت اور بلند اخلاقی کا مظاہرہ کرتے۔اللہ تعالیٰ سے دعا ہے کہ کہ علمی دنیا کو ان کے انتقال سے جو ناقابل تلافی نقصان پہنچاہے اللہ تعالیٰ اس کا نعم البدل عطا فرمائے ۔

Tags
Back to top button
Close

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker