Baseerat Online News Portal

لاک ڈاؤن میں اتنا فروخت ہوا’پارلے جی‘ بسکٹ کہ ٹوٹ گیا 82 سال کا ریکارڈ

ممبئی، 9 جون (بی این ایس )
جہاں کورونا وائرس اور لاک ڈاؤن کی وجہ سے بہت سارے کاروباری اداروں کو نقصان اٹھانا پڑ رہا ہے۔ وہیں پارلے جی بسکٹ کی فروخت اتنی زیادہ ہوئی کہ پچھلے 82 سالوں کا ریکارڈ ٹوٹ گیا ہے۔ پارلے جی بسکٹ کا پیکٹ، جو صرف 5 روپے میں دستیاب ہے، سیکڑوں کلومیٹر پیدل چلنے والے تارکین وطن کے لئے بھی بہت مددگار ثابت ہوا، کچھ لوگوں نے اسے خود خریدا اور دوسروں نے بطور امداد تقسیم کیا، بہت سارے لوگوں نے پارلے جی بسکٹ کا ذخیرہ اپنے گھروں میں محفوظ کرلیا ہے۔
پارلے جی 1938 سے لوگوں میں ایک پسندیدہ برانڈ رہا ہے۔ لاک ڈاؤن کے درمیان اس نے تاریخ میں سب سے زیادہ بسکٹ فروخت کرنے کا ریکارڈ بنایا ہے، اگرچہ پارلے کمپنی نے فروخت کی تعداد ظاہر نہیں کی لیکن اس نے یہ بتایا کہ مارچ، اپریل اور مئی گذشتہ 8 دہائیوں میں اس کا بہترین مہینہ تھا۔پارلے پروڈکٹس کے زمرے کے سربراہ مینک شاہ نے بتایا کہ کمپنی کے کل مارکیٹ شیئر میں تقریبا 5 5 فیصد اضافہ ہوا ہے اور اس شرح نمو میں 80-90 فیصد پارلے جی کی فروٹ سے آیا ہے۔
کچھ آرگنائزڈ بسکٹ بنانے والی کمپنیاں جیسے پارلے جی نے لاک ڈاؤن کے فورا بعد ہی آپریشن شروع کردیا۔ ان میں سے کچھ کمپنیوں نے اپنے ملازمین کی نقل و حرکت کا بندوبست بھی کیا تھا تاکہ وہ آسانی سے اور محفوظ طریقے سے کام پر آسکیں،جب فیکٹریاں شروع ہوئیں تو ان کمپنیوں کی توجہ کا مرکز ایسی مصنوعات تیار کرنا تھا جن کی زیادہ فروخت ہو۔
صرف پارلی جی ہی نہیں پچھلے تین مہینوں میں لاک ڈاؤن کے دوران، دوسری کمپنیوں کے بسکٹ بھی بہت فروخت ہوئے۔ ماہرین کے مطابق، برٹینیا کے گڈ ڈے کے علاوہ ٹائیگر، دودھ بکیس، باربرن اورمیری بسکٹ کے علاوہ پارلے کا کریک جیک، موناکو، ہائڈ اینڈ سیک بسکٹ بھی خوب فروخت ہوئے۔
پارلے پروڈکٹس نے اپنی سب سے زیادہ فروخت ہونے والی لیکن کم قیمت والے برانڈ پارلے جی پر توجہ دی، کیوں کہ اسے صارفین کی طرف سے بہت زیادہ ڈیمانڈ مل رہی تھی۔ کمپنی نے اپنے ڈسٹری بیوشن چینل کو ایک ہفتہ کے اندر بھی ری سیٹ کردیا تاکہ خوردہ دکانوں میں بسکٹ کی کمی نہ ہو۔ مینک شاہ کا کہنا ہے کہ پارلے جی لاک ڈاؤن کے دوران بہت سارے لوگوں کے لئے آسان کھانا بن گئے۔ کچھ لوگوں کے لئے تو یہ ان کا واحد کھانا تھا، جو لوگ روٹی نہیں خرید سکتے وہ بھی پارلے جی بسکٹ خرید سکتے ہیں۔

You might also like