Baseerat Online News Portal

بھارتی فوجیوں پر چینی درندگی ناقابل معافی جرم ،ڈاکٹر حسنین قیصر۔مرکزی حکومت چین کے خلاف سخت ایکشن لے، پارٹی کے سابق قومی صدر راہل گاندھی کی 50 ویں سالگرہ پر ملکی مفاد میں ایک جٹ ہونے کا دیا پیغام

جالے:19؍جون (رفیع ساگر؍بی این ایس)ایک طرف بھارت سمیت پوری دنیا ہلاکت خیز وبا کورونا وائرس کو لیکر پریشان حال ہے وہیں دوسری طرف بھارت کی چمک دمک پاکستان کے علاوہ نیپال اور چین جیسے پڑوسی ممالک کی نظروں میں بھی چبھنے لگی ہے اور یہی وجہ ہیکہ ایک طرف آج نیپال نے بھارت کے 3 خطوں کو اپنے نقشے میں شامل کر صدر نیپال کے دستخط کے بعد اس نقشہ کو قانونی عملی جامہ پہنا دیا ہے تو دوسری طرف چین نے بھی سرکشی کرتے ہوئے اپنے فوجیوں کی مدد سے سرحد عبور کرکے نہ صرف بھارتی زمین پر قبضہ جما لیا ہے بلکہ تنبوڈیرہ گاڑ کر ، خندقیں کھود کر فوجی سازوسامان کو بھی نصب کر لیا ہے۔مذکورہ باتیں میڈی کیئر سیل پرائیویٹ لیمیٹیڈ پٹنہ کے انچارج و بہار اسٹیٹ کانگریس میڈیکل سیل کے صوبائی صدر ڈاکٹر حسنین قیصر نے کانگریس کے سابق صدر راہل گاندھی کے 50 ویں سالگرہ پر انہیں مبارکباد دی حالانکہ چین کے ساتھ بھارتی فوجیوں کی شہادت پر انہوں نے سالگرہ کا جشن نہیں منایا بلکہ غریبوں اور ملکی مفاد میں پارٹی ورکروں کو کام کرنے کا مشورہ دیا۔ڈاکٹر حسنین قیصر ان دنوں پارٹی کو بوتھ سطح پر مستحکم کرنے کے لئے لگاتار پارٹی ورکروں کے ساتھ جالے اسمبلی حلقہ میں بوتھ کمیٹی تشکیل دے رہے ہیں ۔انہوں نے کہا کہ کورونا وائرس جیسی وبا اور لداخ کی خوبصورت وادی گلوان میں چینی فوجیوں کے ساتھ دست بدست جھڑپ میں کرنل سمیت 20 ہندوستانی فوجیوں کی شہادت کو لیکر جاری موجودہ مغموم صورتحال میں جہاں راہل گاندھی نے خوشیوں کا اظہار نہ کر نے کا اعلان کیا تھا وہیں اس دن کو مظلوم اور غریب کی مدد کرنے کے طور پر منانے کو لیکر درخواست بھی کی تھی۔ ڈاکٹر حسنین قیصر نے کہا کہ امن پسند بھارت ہمیشہ ہند چین سرحدی تنازعے کو پچھلے کئی سالوں سے پرامن طریقے سے حل کرنے کی کوششیں کر رہا تھا لیکن چینی فوجیوں نے جس طرح مجرمانہ حرکت کرتے ہوئے خاردار لاٹھیوں اور لوہے کی سلاخوں سے فوجی افسران پر جان لیوا حملہ کیا ہے وہ نا قابل معافی جرم ہے اور اسکی نہ صرف میں شدید مذمت کرتا ہوں بلکہ اس پر بھارت کے 130 کروڑ عوام کی ناراضگی بھی صاف دیکھنے کو مل رہی ہے۔ انہوں نے راہل گاندھی کے سوال کو دہراکر بر سر اقتدار پارٹی پر حملہ کرتے ہوئے کہا کہ آخر کس کے حکم پر بھارتی فوجیوں کو چینی فوجیوں کے پاس نہ صرف غیر مسلح کرکے ملاقات کے غرض سے بھیجا تھا بلکہ آرمی پروٹوکول کے تحت ان کے تحفظ کیلئے مسلح بیک اپ فورس بھی دستیاب نہیں کرائی گئی تھی جس کی سزا بھارتی فوجیوں کو جام شہادت پی کر دینا پڑا۔ ڈاکٹر قیصر نے کہا کہ اس وقت چین کی مجموعی گھریلو پیداوار بھارت سے 5 گنا زائد ہے اس کے علاوہ چین دنیا کی دوسری سب سے بڑی معیشت ہے جبکہ بھارت پانچویں نمبر پر ہے لیکن اس میں کوئی شک نہیں ہیکہ بھارتی معیشت گزشتہ 30 برسوں میں دنیا کی ایک بڑی طاقت بن کر ابھری ہے البتہ آج یہ کہتے ہوئے نہایت ہی افسوس ہو رہا ہیکہ بی جے پی کے پچھلے 6 سالوں کی حکومت کے دوران اقتصادی پالیسیوں نے ہماری معیشت کو تقریباً بربادی کے دہانے پر لاکر کھڑا کر دیا ہے اور جو کچھ کسر باقی تھا وہ کورونا وبا کے دوران پورا ہوگیا جبکہ اس کے برعکس چین نے اپنی چالاکی سے موجودہ صورتحال میں بھی اپنی ڈوبتی معیشت کو بچانے کیلئے ہر ممکنہ کوشش کرتے ہوئے وبائی علاج کے لوازمات کو فروخت کر کے بھی مالی فائدہ اٹھایا ہے اس لئے ایسی دگرگوں صورتحال میں بھارتی شہری وزیر اعظم نریندر مودی کی طرف امید بھری نگاہ سے دیکھ رہے ہیں کہ معزز وزیر اعظم اب چین پر کس طرح کے سرجیکل اسٹرائیک کی تیاری میں ہے جہاں باہمی سیاسی اختلافات بھلاکر وہ کس طرح کی حکمت عملی طے کرینگے جس میں اپنا دفاع کرتے ہوئے چین کو اس کے کرتوت کا جواب دے سکے۔

You might also like