ہندوستان

عوام بڑھتی مہنگائی اورپٹرول،ڈیزل کی شرحوں میں اضافے کے خلاف آوازاٹھائیں

سونیاگاندھی نے کہا،مودی سرکار نے 25 مارچ سے پٹرول اور ڈیزل کی قیمت میں 22 بار اضافہ کیا
نئی دہلی29جون(بی این ایس )
سونیاگاندھی نے ایک ویڈیوپیغام شائع کیاہے۔ انہوں نے کہا ہے کہ پٹرول کی بڑھتی قیمتوں نے متوسط طبقے کوہلا کررکھ دیاہے۔ قیمتوں میں مسلسل اضافہ ہر طبقے کو متاثرکررہا ہے۔ نئی دہلی آج کانگریس پیٹرول اور ڈیزل کی قیمتوں میں اضافے کے خلاف سراپا احتجاج ہے۔ کانگریس نے ہیش ٹیگ #SpeakUpAgainstFuelHike ڈیجیٹل مہم بھی شروع کردی ہے۔ اس کے تحت،دہلی میں احتجاج کرنے والی کانگریس کمیٹی کے کچھ ممبروں کو پولیس نے حراست میں لیاہے۔ادھرکانگریس کی چیئرپرسن سونیا گاندھی نے بھی #SpeakUpAgainstFuelHike کے تحت ایک ویڈیوپیغام شائع کیا ہے اور لوگوں سے پیٹرول اور ڈیزل کی بڑھتی قیمتوں کے خلاف آواز اٹھانے کی اپیل کی ہے۔ویڈیومیں سونیا گاندھی نے کہاہے کہ کورونا کی وبا کے درمیان پٹرول اور ڈیزل میں مسلسل اضافے نے ملک کے لوگوں کاجینامشکل بنادیا ہے۔ آج دہلی اور دوسرے بڑے شہروں میں پٹرول کی قیمتیں80 روپے فی لیٹرکوعبورکرچکی ہیں۔ 25 مارچ کو لاک ڈاؤن کے بعد مودی حکومت نے پچھلے تین ماہ میں مسلسل 22 بار پٹرول اور ڈیزل کی قیمتوں میں اضافہ کیا۔ یہ سب اس وقت ہو رہا ہے جب بین الاقوامی منڈی میں خام تیل کی قیمتیں مسلسل کم ہو رہی ہیں۔ 2014 کے بعد لوگوں کو خام تیل کی قیمتوں میں کمی کا فائدہ دینے کی بجائے مودی حکومت نے 12 مرتبہ ایکسائز ڈیوٹی بڑھا دی جس کی وجہ سے پٹرول اورڈیزل کی قیمتیں آسمانوں سے دوچارہیں۔ قیمتوں میں مسلسل اضافہ ہر طبقے کو متاثرکررہا ہے۔ سونیا گاندھی نے اس معاملے پروزیراعظم نریندر مودی کو ایک خط لکھا تھا۔ سونیاگاندھی نے اپیل کی تھی کہ لوگوں کو اس وقت ملازمت کا بحران ہے ، ایسے میں حکومت کوچاہیے کہ بڑھتی ہوئی قیمتوں کو فی الفور واپس لے۔

Tags
Back to top button
Close

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker