Baseerat Online News Portal

تلنگانہ میں مندر-مسجد پر تنازعہ: بی جے پی اورکانگریس سی ایم کے سی آر پر حملہ آور،کانگریس سپریم کورٹ جائے گی

حیدرآباد11جولائی(بی این ایس )
تلنگانہ کے سکریٹریٹ کمپلیکس میں مندر اور دومساجد کو نقصان پہنچا ہے۔ اب اس معاملے پر سیاسی جماعتوں کی جانب سے الزامات اور جوابی الزامات کا ایک سلسلہ شروع ہوگیا ہے۔ کانگریس اور بی جے پی نے اسے تاریخ کا سیاہ دن قراردیاہے۔کانگریس کے ورکنگ صدر نے وزیراعلیٰ کے چندر شیکھر راؤ کو نشانہ بنایا ہے۔ریڈی نے کہاہے کہ وزیراعلیٰ چندرشیکھر راؤکے جذبات دیگر تمام مذاہب کے مذہبی جذبات سے بالاترہیں۔ وزیراعلیٰ کی توہم پرستی کے سبب سیکرٹریٹ کمپلیکس کے ساتھ ندر اور دو مساجد کو نقصان پہنچا۔ وہ چاہتے ہیں کہ ان کا بیٹا تارارام راؤ اگلا وزیراعلیٰ بنے۔ریڈی نے کہاہے کہ چیف منسٹر کی توہم پرستی سیکرٹریٹ کمپلیکس کی عمارت کو منہدم کرنے کی بنیادی وجہ ہے۔ انھیں لگتا ہے کہ نااہل سیکرٹریٹ اپنے بیٹے کا سیاسی مستقبل محفوظ نہیں رکھ سکتا۔ سپریم کورٹ کے حکم کے مطابق حسینس نگر کے قریب مستقل عمارت تعمیر نہیں کی جاسکتی ہے اور ہم اس معاملے میں بھی سپریم کورٹ جائیں گے۔دوسری طرف بی جے پی کے جنرل سکریٹری پی مرلی دھر راؤ نے بھی کے سی آر حکومت کو نشانہ بنایا ہے۔ راؤ نے کہاہے کہ اب ان کی حکومت کے دن ختم ہوگئے ہیں۔مندرکومسمار کرنا لعنت ہوگی جو کے سی آر حکومت کوپریشان کرے گی۔

You might also like