Baseerat Online News Portal

صدرجمہوریہ سے مل کربی جے پی لیڈران نے مغربی بنگال حکومت کو برخواست کرنے کا مطالبہ کیا

نئی دہلی،14جولائی(بی این ایس )
بی جے پی لیڈران کے ایک وفد نے منگل کو صدر رام ناتھ کووند سے ملاقات کی اور مغربی بنگال کے شمالی دیناجپور پور ضلع کے ہیمنت آباد کے ممبر اسمبلی دبیندر ناتھ رے کی مشتبہ حالات میں موت کی سی بی آئی تحقیقات کی مانگ کے ساتھ ساتھ ریاست کی ترنمول کانگریس حکومت کو برخاست کرنے کابھی مطالبہ کیا۔بی جے پی کے جنرل سکریٹری اور مغربی بنگال کے انچارج کیلاش وجے ورگیہ کی سربراہی میں وفد نے مغربی بنگال قانون ساز اسمبلی کو تحلیل کرنے اور صدر کووند سے اس سلسلے میں ضروری اقدامات اٹھانے کولے کر ملاقات کی۔ صدر سے ملاقات کے بعد صحافیوں سے بات کرتے ہوئے وجے ورگیہ نے کہاکہ ہمیں وہاں کی کسی بھی ایجنسی پر اعتماد نہیں ہے، ہم نے صدر سے مطالبہ کیا ہے کہ اس معاملے کی سی بی آئی انکوائری ہونی چاہئے۔انہوں نے کہاکہ وہیں ایسی حکومت کو اقتدار میں رہنے کا کوئی حق نہیں ہے، جہاں عوامی نمائندے بھی محفوظ نہیں رہ سکتے،اس لئے اس حکومت کو فوری طور پر برخاست کردیا جائے، اس سلسلے میں گورنر سے رپورٹ منگوانی چاہئے۔ مغربی بنگال میں جمہوریت سولی پر لٹکی ہوئی ہے، اب تک کارکنان کو قتل کیا جارہا تھا، ارکان پارلیمنٹ کو ان کے انتخابی حلقوں میں جانے کی اجازت نہیں دی جارہی تھی اور اب عوامی نمائندوں کو مارا جارہا ہے اور اس کو خود کشی ظاہر کرکے پورا منظر تبدیل کیا جارہا ہے۔ میں سمجھتا ہوں کہ مغربی بنگال ملک کے اندر ایک انتشار پسند ریاست بن گئی ہے جہاں حکومت کو اقتدار میں رہنے کا کوئی حق نہیں ہے۔انہوں نے کہاکہ اس حکومت کو یہ حق نہیں ہے کہ وہ ایک منٹ تک بھی بنی رہے،اس لئے اسمبلی تحلیل کی جانی چاہئے۔ صدر کو پیش کی جانے والی یادداشت میں پارٹی نے دعوی کیا ہے کہ گذشتہ تین سالوں میں بی جے پی کے 105 کارکنان یا حامیوں کو حکمراں جماعت نے بے دردی سے قتل کیا ہے۔

You might also like