Baseerat Online News Portal

مولاناعیسیٰ رحمانیؒ عالم باعمل اورصالح شخصیت کے مالک تھے:مولانامحمدولی رحمانی مونگیر : 28 جولائی (پریس ریلیز)

مولاناعیسیٰ رحمانیؒ عالم باعمل اورصالح شخصیت کے مالک تھے:مولانامحمدولی رحمانی

مونگیر : 28 جولائی (پریس ریلیز)

جامعہ رحمانی کے سابق نائب ناظم مولاناعیسیٰ رحمانیؒ کے انتقال پرامیرشریعت مولانامحمدولی رحمانی جنرل سکریٹری آل انڈیامسلم پرسنل لاءبورڈ نے گہرے رنج وغم کااظہارکیاہے ۔انھوں نے اپنے تعزیتی کلمات میں ان کی اوصاف حمیدہ کی تعریف کی ہے اورمغفرت کی دعاءکی ہے۔امیرشریعت دامت برکاتہم نے کہاہے کہ مولاناعیسی رحمانی صوم وصلوة اورتلاوت قرآن مجیدکے نہایت پابندتھے۔وہ عالم باعمل تھے ،نیک اورصالح شخصیت کے مالک تھے ۔یہاں تک کہ انتقال کی رات بھی عشاءکی نمازپڑھی۔امیرشریعت رابع ؒ سے گہرے تعلقات تھے ،جامعہ رحمانی اورخانقاہ رحمانی کے مخلص تھے ۔ان کی دینداری اورنمازکی پابندی کایہ عالم تھاکہ گھروالوں کابیان ہے کہ شایدہی ان کی کوئی نمازقضارہ گئی ہو۔ مولاناعیسی رحمانی تقریباََچھتیس برس جامعہ رحمانی سے وابستہ رہے۔اورنائب ناظم شعبہ مالیات بھی رہے ۔آپ نے جامعہ رحمانی میں درجہ ششم عربی تک تعلیم حاصل کی ۔پھردارالعلوم دیوبندسے فراغت ہوئی۔بعدفراغت امیرشریعت رابع ؒ کی خدمت میں زیرتربیت رہے۔آپ سے کسب فیض کیا،امیرشریعت رابع ؒکے ساتھ مختلف اسفارکیے۔حج کے سفرکے رفیق بھی رہے۔مولانادیگھون ضلع کھگڑیاکے رہنے والے تھے ۔آپ کے پانچ فرزند ہیں جن میں تین فرزند میں دوحافظ اورایک عالم ہیں اورانھوں نے جامعہ رحمانی میں تعلیم حاصل کی ہے۔

تدفین آبائی وطن دیگھون کھگڑیا میں ہوئ نماز جنازے دوسرے صاحب زادے مولانا محمد اکرم رحمانی نے پڑھائی جسمیں بڑی تعداد میں علاقے کے لوگوں کے علاوہ جا معہ رحمانی خانقاہ رحمانی مونگیر کے احباب مخلصین شریک ہوئے.

You might also like