Baseerat Online News Portal

قربانی اللہ کی رضا کااہم ترین ذریعہ اور بہترین عبادت ہے:محمد رفعت عثمانی

بیگوسرائے:۳۱؍جولائی(پریس ریلیز)ماہ ذی الحجہ میں عام مسلمانوں کیلئے جوسب سے زیادہ مسرت اور خوشی کا سامان ہے وہ عید الاضحی ہے (یعنی قربانی کی عید) جو دراصل سیدنا ابراہیم علیہ السلام اوراسماعیل علیہ السلام کی بے مثال قربانیوں کی یاد گار ہے جسے اللہ نے اول ترین عبادت قرار دیکر اس کا احترام تمام مسلمانوں پر لازم کر دیا ،اسے شعائراسلام بتایا یہی وجہ ہیکہ ایام قربانی میں یہ حکم دیا گیا ہیکہ جس پر قربانی واجب ہو وہ سنت ابراہیمی کو زندہ کرتے ہوئے اپنی طرف سے ایک جانور محض رضائے الہٰی کے خاطر قربانی کرے جس طرح حضرت ابراہیم علیہ السلام نے قربانی کیا تھا-مذکورہ باتیں مولانا محمد رفعت عثمانی نمائندہ امارت شرعیہ بیگوسرائے نے کہی، انہوں نے کہا کہ خوش نصیب ہیں وہ لوگ جو اللہ کا یہ حکم پورا کرتے ہیں اور جانور کے ہرہربال کے عوض نیکی پاتے ہیں، ایک جانور کے جسم پر بے شمار بال ہوتے ہیں اندازہ کیجئے کہ ان کے نامۂ اعمال میں کتنی نیکیاں لکھ دی جاتی ہیں اس سے بڑھ کر اور کیا خوشخبری ہو سکتی ہے کہ خون کا ایک قطرہ ز مین پرگرنے سے پہلے قربانی کرنے والے کی مغفرت ہوجاتی ہے،عثمانی نے کہا کہ بد نصیب ہیں وہ لوگ جو باوجود استطاعت و قدرت کے قربانی نہیں کرتے اللہ کے رسول صلی اللہ علیہ وسلم نے ایسے لوگوں کے لئے بڑی سخت وعید ارشاد فرمائی ہے کہ جو شخص باوجودِ وسعت و قدرت کے قر بانی نہ کرے وہ ہمارے عیدگاہ کے قریب بھی نہ آئے،مولاناموصوف نے کہا کہ قربانی اللہ کی رضا ء کا اہم ترین ذریعہ اور بہترین عبادت ہے اس کو انتہائی نیاز مندی اور خلوص کے ساتھ ادا کیا کریں ،ایک سالانہ قربانی پورے سال ضمیر کو بیدار اور ایمان کو تازہ رکھتی ہے قربانی کے بغیر ایمانی حمیت وغیرت مردہ ہو جاتی ہے ،تاریخ شاہد ہے کہ جن لوگوں نے قربانی کو جان بوجھ کر چھوڑ دیا ان کے قلوب مردہ ہو گئے اور وہ اپنا نام و نشان کھو بیٹھے،اس لیے صاحب نصاب کو قربانی کے ایام میں قربانی ہی کرنا ہو گا الا یہ کہ حکومتی پابندیوں کی بنا پر خود سے نہیں کر سکتے تو دوسری جگہیں جہاں آسانی کے ساتھ ہو رہا ہو وہاں کروائیں ،جیسا کہ مخدوم گرامی حضرت امیر شریعت مولانا محمد ولی رحمانی صاحب مد ظلہ نے تمام لوگوں سے یہ گذارش کی ہے کہ جہاں گنجائش ہو وہاں قربانی ضرور کی جائے لہٰذایہ کہنا کہ اس کی رقم کو صدقہ کر دیا جائے یاوزیراعظم کیٔر فنڈ میں دے دیا جائے وغیرہ یہ ملت کو اصل فکر و عمل سے ہٹانے کی منظم مہم ہے، اسے امت مسلمہ کو سمجھنا ہوگا اور شریعت اسلامی کی مکمل معلومات حاصل کر عملی جامہ پہنانا ہوگا تبھی اللہ کی رحمت و مغفرت اور اس کی سچی خوشنودی حاصل ہوگی یہ اطلاع محمد عفان عثمانی نے دیا۔

You might also like