Baseerat Online News Portal

مولانافاتح اقبال ندوی قاسمی مدرسہ چشمۂ فیض ململ کے مہتمم منتخب

دارالعلوم ندوۃ العلماء لکھنؤ کے سینئراستاذمولانانذرالحفیظ ندوی سمیت ململ واطراف ململ کے عوام وخواص نے اس انتخاب کومدرسہ چشمہ فیض کے لئے نیک فال بتایا

مدھوبنی:۹؍اگست(نمائندہ خصوصی)مولانافاتح اقبال ندوی قاسمی کومدرسہ چشمہ فیض ململ مدھوبنی کااتفاق رائے سے مہتمم منتخب کرلیاگیاہے۔مدرسہ کے سابق مہتمم حضرت مولاناوصی احمدصدیقی قاسمی اورنائب مہتمم مولانامکین احمدرحمانی کی وفات کے بعدیہ عہدہ خالی ہوگیاتھا۔چوں کہ مولانافاتح اقبال ندوی قاسمی مدرسہ کے سابق مہتمم مولاناوصی احمدصدیقی قاسمی اورمولانامکین احمدرحمانی رحمہم اللہ کے ساتھ گذشتہ ۲۰ سالوں سے مدرسہ چشمہ فیض ململ کے انتظام وانصرام کوچلاتے آرہے تھے ،مدرسہ کے حالات اورانتظامی امورپرمکمل گرفت ہونے کی وجہ سے اہالیان ململ نے انہیں مولاناوصی احمدصدیقی قاسمی رحمۃ اللہ علیہ کے جانشین کے طورپرمنتخب کرکے مدرسہ کی مکمل ذمہ داری انہیں سونپ دی۔اس موقع پرمولانافاتح اقبال ندوی قاسمی نے عوام کے جم غفیرسے خطاب کرتے ہوئے کہاکہ آپ حضرات نے مجھ پراعتمادکیااس کے لئے سب سے پہلے میں اپنے رب ذوالجلال کاشکرگذارہوں کہ انہوں نے مجھے اس لائق بنایااورپھرآپ تمام حضرات کاشکریہ اداکرتاہوں کہ آپ حضرات نے اتنی عظیم ذمہ داری کے لئے مجھ جیسے حقیراورکمزورانسان پراعتمادکرتے ہوئے میرے دوش ناتواں پراتنابڑابوجھ ڈال دیا۔یقیناحضرت مولاناوصی احمدصدیقی قاسمی رحمۃ اللہ علیہ نے اپنے خون پسینے سے چشمہ فیض کوسینچاہے،انہوں نے مدرسہ کی تعمیروترقی کے لئے اپناسب کچھ قربان کردیاتھا،انشاء اللہ میں آپ حضرات سے وعدہ کرتاہوں کہ چشمہ فیض کےاس فیض کومزیدعام کرنے میں میں اپنی جانب سے کوئی کوتاہی نہیں کروں گا،اورکوشش کروں گاکہ آج مدرسہ جتنی ترقی پرہے ،ہم آپ حضرات کی مخلصانہ تعاون اوربرادرانہ مددسے اسے مزیدآگے لے جائیں اوراس کے فیض کوپوری دنیامیں پھیلائیں۔مدرسہ فردواحدسے نہیں چلتاہے،بلکہ اس کوچلانے کے لئے ہرفردکومحنت کرناپڑتی ہے،میں آپ حضرات سے درخواست کروں گاکہ آپ میں سے ہرفردمیرے دست وبازوبن کر،میری آنکھ اورکان بن کرمیراساتھ دیں اوراورچشمہ فیض کے فیض کواورزیادہ عام کریں۔مولانافاتح اقبال نے مزیدکہاکہ یقینامیں بھی ایک انسان ہوں،میں آپ کے چھوٹے بھائی جیساہوں،آپ کے بیٹے کی طرح ہی ہوں اورآپ کاعزیزہوں،اگرمجھ سے کوئی غلطی ہوجائے اوریقیناہوں گی تومجھے اس وقت خوشی ہوگی کہ آپ مجھے میری غلطیوں پرایک بڑے بھائی کی طرح،ایک سرپرست کی طرح مجھے ٹوکیں،متنبہ کریں اورمیری غلطیوں کی اصلاح کریں،یہ یقینامیرے لئے خوشی ومسرت کی بات ہوگی اوراس سے مجھے اپنی غلطی کی اصلاح کرنے میں مددملے گی،اورایک مخلص بھائی کے لئے یہی مناسب ہے۔اس موقع پرمولانافاتح اقبال ندوی نے اعلان کیاکہ انشاء اللہ بہت جلدنائب مہتمم کابھی انتخاب کرلیاجائے گااسی کے ساتھ انہوں نے مدرسہ کے ناظم تعلیمات مولانامعین احمدندوی کومدرسہ کے تعلیمی امورکاسرپرست مقررکرنے کابھی باضابطہ اعلان کیا۔مولانافاتح اقبال ندوی قاسمی کے باضابطہ طورپرمہتمم منتخب ہونے کے بعددارالعلوم ندوۃ العلماء لکھنؤ کے سینئراستاذمولانانذرالحفیظ ندوی ازہری نے اس انتخاب کومدرسہ چشمہ فیض کے لئے نیک فال قراردیااوراپنی نیک خواہشات پیش کیں،اسی کے ساتھ مولانافاتح اقبال ندوی کے مہتمم منتخب ہونے کے بعدململ واطراف کے علماء ودانشوران نے اپنے تائیدی کلمات سے نوازا اورنیک خواہشات پیش کیں،تائیدکرنے والوں اورنیک خواہشات پیش کرنے والوں میںمولاناعبدالرشیدافروز، سعودی عرب میں مقیم مولاناشکیل الرحمن پیامی ندوی،دوبئی میں مقیم مولاناحسان اخترندوی مظاہری،مولانااکرام الرحمن فلاحی،نجم الہدیٰ ثانی،خطیب الرحمن ندوی،مسرورعالم ندوی،محفوظ عالم ندوی،ڈاکٹرآفتاب احمدفیصل،شاہدجمال گڈو،انورامام منٹو،ڈاکٹررئیس احمد،مفتی مجتبیٰ حسن قاسمی استاذحدیث وفقہ دارالعلوم ماٹلی والابھروچ گجرات،مولانارشیداحمدندوی ممبئی،مولانامظفررحمانی ایڈیٹربصیر ت آن لائن،مولاناخان افسرقاسمی ایڈیٹرہفت روزہ ملی بصیرت ممبئی،مفتی محمداحمدقاسمی ممبئی،مولانانعمت اللہ ناظم قاسمی مکہ مکرمہ،مولاناانس عباد صدیقی جدہ،مولانانظام الدین ندوی مکہ مکرمہ،مفتی محمدعمرعابدین قاسمی مدنی نائب ناظم المعہدالعالی الاسلامی حیدرآباد،مولاناغفران ساجدقاسمی چیف ایڈیٹربصیرت آن لائن،قاضی شفیق قاسمی جئے پور،مفتی محمداشفاق قاضی جامع مسجدممبئی،مولانانازش ہماقاسمی ممبئی اردونیوز،مولانانجیب الرحمن ندوی ململی وغیرہ شامل ہیں۔
واضح رہے کہ مدرسہ چشمہ فیض ململ شمالی بہارہی نہیں بلکہ ہندوستان کاقدیم ترین دینی ادارہ ہے جس کی عمرتقریباپونے دوسوسال ہوچکی ہے۔گذشتہ ۴۵؍سالوں سے حضرت مولاناوصی احمدصدیقی قاسمی نوراللہ مرقدہ مدرسہ کااہتمام سنبھال رہے تھے اورمولانامکین احمدرحمانی رحمۃ اللہ علیہ ان کے دست وبازوبن کرکام کررہے تھے۔لیکن گذشتہ ۲۱؍جولائی کومختصرعلالت کے بعدمولاناوصی احمدصدیقی قاسمی نوراللہ مرقدہ کاوصال ہوگیااورٹھیک ایک ہفتہ بعد۲۹؍جولائی کومولانامکین احمدرحمانی بھی داغ مفارقت دے گئے۔اس کے بعدململ واطراف ململ کی عوام وخواص نے متفقہ طورپرایک میٹنگ بلاکرمولانافاتح اقبال ندوی قاسمی کومدرسہ چشمہ فیض ململ کامہتمم منتخب کرلیا۔اس موقع پرململ واطراف ململ کی عوام وخواص کثیرتعدادمیں موجودرہی جس میں بطورخاص مولانامعین احمدندوی ناظم تعلیمات مدرسہ چشمہ فیض وامام وخطیب جامع مسجدململ،مولاناشمس عالم فلاحی،خلیق الرحمن،ڈاکٹرحنان،انیس الرحمن،فیروزاحمدچھوٹا،شاداب اخترراجو،اعجازامام،کاشف حسن ندوی، شہبازندوی، سعیدندوی،عبدالخالق ندوی،ڈاکٹرمحبوب عالم،افسرامام،ریاض الدین،ندیم احمد،ثناء اللہ،امجدحسین،حجازاخترننھے،کفیل احمددرگاہی مکھیاململ،نشاط احمداورمہتاب احمدقابل ذکرہیں۔

You might also like