Baseerat Online News Portal

مورتی وسرجن کے دوران پاکٹولہ میں شرپسندوں کا مسجد پر حملہ ،جھڑپ میں کئی زخمی ،حالات کشیدہ ،مین سڑک پر کئی مسافروں کی جم کر کی پٹائی

مورتی وسرجن کے دوران پاکٹولہ میں شرپسندوں کا مسجد پر حملہ ،جھڑپ میں کئی زخمی ،حالات کشیدہ ،مین سڑک پر کئی مسافروں کی جم کر کی پٹائی

 

دربھنگہ ۔ محمد رفیع ساگر / بی این ایس

13 اگست 2020

جالے تھانہ کے سرحدی علاقہ سیتامڑھی ضلع کے نان پور تھانہ کے پاکٹولہ گاوں میں جمعرات کی شام جنم اشٹمی وسرجن جلوس میں شامل شرپسندوں کے ذریعہ مسجد پر سنگ باری سے فرقہ وارانہ کشیدگی پھیل گئی۔اس دوران سنگ باری اور مارپیٹ میں دونوں جانب سے درجنوں افراد کے زخمی ہونے کی اطلاع ہے تاہم انتظامی سطح پر اس کی تصدیق نہیں ہوپائی ہے۔حالانکہ انتظامی افسران نے بروقت کارروائی کر حالات کو پرامن بنایا ہے ۔فی الحال موقع پر سینئر پولیس حکام اضافی پولیس فورس کے ساتھ کیمپ کر رہے ہیں۔گاوں کے اقلیتی طبقہ کا الزام ہے کہ عصر کی نماز کے وقت ڈی جے کے ساتھ متنازعہ نعروں کے ساتھ جلوس مسجد کے قریب سے گزر رہا تھا ۔تبھی بھیڑ میں شامل شرپسندوں نے منصوبہ بند طریقے سے مسجد پر حملہ کردیا اور توڑ پھوڑ کی۔اس وقت موجود نمازیوں کے ساتھ مارپیٹ بھی ہوئی ۔جیسے ہی فرقہ وارانہ جھڑپ کی خبر عام ہوئی علاقے میں دہشت پھیل گیا۔اس دوران شرپسندوں نے جالے۔بھرواڑہ سڑک میں مہدئی چوک اور پاکٹولہ کے بیچ کئی مسلم مسافروں کو نشانہ بنا کر جم کر پٹائی بھی کردی۔ مقامی تھانہ کے دوگھرا گاوں کے ایک ہی خاندان کے 4 افراد پر شرپسندوں نے جان لیوا حملہ کر زخمی کردیا۔زخمیوں میں

مولانا ذکی احمدمظاہری،سمیع احمد، مولانا زاہد وصی ندوی سمیت دیگر شامل ہیں۔یہ سبھی مین سڑک سے آٹو سے گھر لوٹ رہے تھے تبھی مسلم مسافر سمجھ کی بھیڑ نے ان پر جان لیوا حملہ کردیا۔

فی الحال گاوں میں حالات معمول پر ہیں اور پولیس کی نقل و حرکت جاری ہے۔ ادھر دربھنگہ ایس ایس پی بابو رام نے کہا کہ جالے تھانہ علاقہ میں پوری طرح نظم و نسق بحال ہے۔احتیاط کے طور پر وہاں ٹریفک ڈی ایس پی برجو پاسوان ،انسپکٹر بسنت کمار جھا اور تھانہ انچارج دلیپ کمار پاٹھک سمیت کئی پولیس اہلکاروں کی سرگرمی جاری ہے۔موقع پر صدر ایس ڈی او اور ایس ڈی پی او بھی روانہ ہوچکے ہیں۔

 

 

You might also like