Baseerat Online News Portal

کانگریس کی چھایا ورما نے کہا، میں راجیہ سبھا رکن ایم پی ہوں لیکن لوک سبھا میں بیٹھ رہی ہوں، وینکیا نائیڈو نے دیا مضحکہ خیز جواب

نئی دہلی،15ستمبر(بی این ایس )
پارلیمنٹ کے دونوں ایوانوں میں حکمران جماعت اور حزب اختلاف کے مابین تلواریں کھینچ گئیں لیکن اس کے درمیان، ایسے ہی کچھ واقعات پیش آرہے ہیں جو اراکین پارلیمنٹ کے چہروں پر مسکراہٹیں پھیلاتے ہیں۔ اس سال مان سون کے سیزن میں کورونا وائرس سے متاثرہ ایسا ہی واقعہ سامنے آیا ہے۔ راجیہ سبھا کی کارروائی منگل کے روز صبح سے جاری تھی۔ ادھر چھتیس گڑھ سے کانگریس کی ایم پی چھایا ورما نے چیئرمین ایم وینکیا نائیڈو سے کہا کہ وہ راجیہ سبھا کی ممبر ہیں لیکن لوک سبھا میں بیٹھی ہیں۔ اپنے عقل اورون لائنر کے لئے مشہور نائیڈو نے تپک سے کہا،’آپ کا ڈموشن ہوگیا ہے‘۔بی جے پی کے ممبر پارلیمنٹ ڈاکٹر وکاس مہاتمے صبح 9.15 کے لگ بھگ راجیہ سبھا میں تقریر کررہے تھے۔ اس کے بعد چیئرمین نے چھایا ورما کا نام پکارا۔ پھر پوچھا – چھایاجی کہاں؟ پیچھے سے آواز آئی،شریمتی چھایا ورما، لوک سبھا گیلری سے بول رہی ہیں۔ میں لوک سبھا سے بول رہی ہوں، گیلری سے نہیں۔ میں راجیہ سبھا کی ممبر ہوں۔ جونہی وہ بولی، ہائوس میں قہقہہ پھوٹ پڑا۔ کانگریس کے رکن پارلیمنٹ کو اپنا ہاتھ بڑھانا تھا اور یہ ظاہر کرنا تھا کہ وہ کہاں بیٹھی ہیں۔چھایا نے منریگا کے بارے میں بات کی۔ جب انہوں نے اپنی بات ختم کردی تو نائیڈو نے کہاکہ ممبر کہیں بھی بیٹھتے ہیں، میں نے اجازت دے دی ہے۔ لیکن آپ کو ایوان زیریں بھیجنے کا فیصلہ غلام نبی آزاد جی اور آنند شرما جی اور (جے رام) رمیش جی نے ایک ساتھ کیا تھا، میں اس کے لئے ذمہ دار نہیں ہوں۔رکن پارلیمنٹ ایک بار پھر ہنس دی۔

You might also like