Baseerat Online News Portal

پولیس کے کردار پر سوال ، پرشانت بھوشن نے صدرجمہوریہ کوخط لکھا

نئی دہلی 16ستمبر(بی این ایس )
بہت سے لوگ پولیس کی تحقیقات اوردہلی تشددسے متعلق چارج شیٹ پر سوال اٹھا رہے ہیں۔ آج ایک پریس کانفرنس میں دہلی پولیس کے کام کی مذمت کی گئی۔ اس پریس کانفرنس سے سینئروکلاء پرشانت بھوشن ،سعیدہ حامد اور کویتا کرشنن نے خطاب کیا۔ تینوں نے دہلی پولیس پر لوگوں کو پھنسانے کا الزام لگایا۔سعیدہ حامد نے کہا کہ میں جامعہ میں رہتی ہوں۔ میں نے دیکھاہے کہ دسمبر میں جامعہ میں کیا ہوا تھا۔ آئین کی بات کرنے والوں کو اس کی سزا دی جاتی ہے۔ ان لوگوں کاکیاقصورتھاجواپنے دوستوں کو بچانے کی کوشش کر رہے تھے؟ ہم نے سوچاتھاکہ سڑکوں پر آکر چیزیں بدل جائیں گی لیکن ان پر بلاجوازالزام عائد کیا گیا۔اسی دوران پرشانت بھوشن نے کہاہے کہ آج دہلی پولیس تشدد کی تحقیقات نہیں کررہی ہے۔بلکہ لوگوں کوپھنسارہی ہے۔ آئین میں احتجاج کا حق دیا گیا ہے ، لیکن اب پولیس کا کہنا ہے کہ جو پڑھاتے تھے ، وہ جذبات بھڑکاتے تھے۔ دہلی پولیس کاکہنا ہے کہ لوگوں کو مشتعل کرنیکے لیے واٹس ایپ گروپ بنایاگیاتھا۔پرشانت بھوشن نے کہاہے کہ دہلی پولیس نے چارج شیٹ داخل کی ہے جس میں کہا گیا ہے کہ ٹرمپ کے دورئہ بھارت کے دوران تشددہواتھا۔ایک سینئر پولیس افسر نے لکھاہے کہ ہندوؤں سے سوالات نہ پوچھیں کیونکہ اس سے ہندوؤں کونقصان ہو رہاہے،یہ کیسے ممکن ہے۔ دہلی پولیس نے لوگوں کے ساتھ مار پیٹ کی ہے۔

You might also like