Baseerat Online News Portal

کورونابحران پرراجیہ سبھا میں حکومت کوسخت سوالات کا سامنا کرناپڑا

نئی دہلی16ستمبر(بی این ایس )
حکومت کی کوششوں کے باوجود ملک میں کورونا وائرس سے متاثرہ افراد کی تعداد 50 لاکھ سے تجاوزکرگئی ہے۔ حکومت کی طرف سے کورونا وبا اور اس کی حکمت عملی کو روکنے میں ناکامی پربہت سارے سوالات اٹھائے جارہے ہیں۔ بدھ کوراجیہ سبھامیں کورونا پر بحث کے دوران وزیرصحت ہرشوردھن کو حزب اختلاف کے بہت سے سخت سوالات کاسامناکرناپڑاہے۔حزب اختلاف نے مزدوروں کی ہلاکت پر پارلیمنٹ میں اعداد و شمار پیش کرنے میں وزیر محنت کی ناکامی پر بھی سوال اٹھایا۔ ترنمول کانگریس کے لیڈرڈیرک او برائن نے کہاہے کہ صحت ، عوامی اخراجات پر ہر سو روپیہ کے لیے ،ریاستی حکومت کے ذریعہ 63 روپے خرچ ہوتے ہیں ، مرکزکے ذریعہ 37 روپے خرچ ہوتے ہیں اور مسئلہ اس وقت پیدا ہوتا ہے جب معاملات ٹھیک چل رہے ہیں۔ اگر آپ کریڈٹ لیناچاہتے ہیں۔ اگر نہیں تو کیا آپ چیف منسٹر اور بلڈوزرکے بارے میں بات کرنا شروع کردیں گے؟بی جے پی کے لیڈر ونے سہسربودھی نے راجیہ سبھاکوبتایاہے کہ لاک ڈاؤن کے بارے میں وزیر اعظم اور کابینہ کے سکریٹری نے کم از کم 15 بار ریاستی حکومتوں سے مشاورت کی ہے ۔ کسی بھی وزیراعلیٰ نے یہ نہیں کہا ہے کہ لاک ڈاؤن نافذ نہیں کیا جانا چاہیے۔بی جے ڈی لیڈر پرسانہ اچاریہ نے کہاہے کہ بہت سی ریاستیں مالی بحران کی شکارہیں۔ جی ایس ٹی معاوضے کے بہت سے فنڈز اور دیگر واجبات مرکزکے پاس زیر التوا ہیں۔ میں مرکز سے اپیل کرتاہوں کہ وہ ریاستوں کو فوری طور پر تمام واجبات اداکریں۔

You might also like