Baseerat Online News Portal

کورونابحران: اقوام متحدہ نے ارب پتیوں سے مانگی مدد، فاقہ کشی سے لوگوں کو بچائیں

آن لائن نیوزڈیسک
اقوام متحدہ کے ادارے ورلڈ فوڈ پروگرام نے دنیا بھر کے ارب پتیوں سے مدد کرنے کی اپیل کی ہے تاکہ بھوک سے موت کی دہلیز پر پہنچ چکے تقریباً 30 کروڑ افراد کی زندگیاں بچائی جاسکیں۔
اقوام متحدہ کے خوراک سے متعلق ادارے ورلڈ فوڈ پروگرام کے سربراہ ڈیوڈ بیسلے نے دنیا بھر کے ارب پتیوں سے اپیل کی ہے کہ وہ تقریباً 30 کروڑ لوگوں کی زندگیاں بچانے کے لیے آگے آئیں کیوں کہ اگر ان لوگوں کو ورلڈ فوڈ پروگرام کی طرف سے مدد نہیں ملی تو یہ موت کا شکار ہو سکتے ہیں۔
ڈیوڈ بیسلے نے جمعرات کے روز اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کو بتایا کہ اس وقت دنیا میں تقریباً 27 کروڑ افراد بھوک سے موت کی دہلیز تک پہنچ چکے ہیں اور ورلڈ فوڈ پروگرام کو اس برس تقریباً 13.8 کروڑ ایسے افراد تک پہنچنے کی امید ہے۔
ڈیوڈ بیسلے کا کہنا تھا، ”ہمیں ایک سال تک ان لوگوں کو کھانا کھلانے کے لیے 4.9 ارب ڈالر کی ضرورت ہوتی اور اگر ورلڈ فوڈ پروگرام نے مدد نہ کی تو تمام 30 کروڑ افراد بھوک سے ہلاک ہو جائیں گے۔”
بیسلے نے بتایا کہ اس وقت دنیا میں 2000 ارب پتی ایسے ہیں جن کی مجموعی دولت آٹھ ٹریلین (کھرب) ڈالر ہے اور بہت سے لوگوں نے کورونا وائرس کی وبا کے دور میں اربوں روپے کمائے ہیں۔
ساوتھ کیرولینا کے سابق گورنر بیسلے کا کہنا تھا ”میں لوگوں کے پیسہ کمانے کے خلاف نہیں ہوں، لیکن اس وقت انسانیت ہماری زندگی کی سب سے سنگین بحران سے دوچار ہے۔”
انسٹی ٹیوٹ آف پالیسی اسٹڈیز کی طرف سے جون میں شائع ایک رپورٹ کے مطابق امریکا میں کورونا وائرس کی وبا کی آمد کے بعد سے امریکی ارب پتیوں کی دولت میں مجموعی طور پر 19 فیصد یا نصف کھرب ڈالر کا اضافہ ہوا ہے۔
رپورٹ کے مطابق 18مارچ، جب امریکا کی بعض ریاستوں میں لاک ڈاون شروع ہوا، کے بعد سے گیارہ ہفتوں کے دوران امیزون کے بانی جیف بیزوس کی دولت میں تقریباً 36.2 ارب ڈالر کا اضافہ ہوا۔ جبکہ فیس بک کے سی ای او مار زکربرگ کی دولت میں 30.1 ارب ڈالر کا اضافہ اور ٹیسلا کے چیف ایگزکیوٹیو ایلن مسک کی مجموعی دولت میں 14.1 ارب ڈالر کا اضافہ ہوا۔
ورلڈ فوڈ پروگرام کے سربراہ کا کہنا تھا ”یہ وقت ان لوگوں کے لیے ہے جن کے پاس سب سے زیادہ دولت ہے، جس سے کہ وہ اس غیر معمولی صورت حال میں ایسے لوگوں کی مدد کرسکیں جنہیں اس کی سب سے زیادہ ضرورت ہے۔ دنیا کو ابھی آپ کی ضرورت ہے اور صحیح کام کرنے کا وقت آگیا ہے۔”

You might also like