Baseerat Online News Portal

راجستھان :کانگریس کا مرکزی سرکار پر زرعی بل کے بہانے حملہ، ملک میں کرونا ، سرحد پر چائنا اورکھیت میں مودی جی نے حملہ کردیاہے : سرجے والا

جے پور، 25 ستمبر ( بی این ایس )
جمعہ کے دن کانگریس کے تجربہ کار رہنماؤں نے جے پور میں پریس کانفرنس سے خطاب کیا۔ اس دوران راجستھان کے وزیر اعلی اشوک گہلوت ، رندیپ سرجے والا اور چھتیس گڑھ کے وزیر ٹی ایس سنگھ دیو موجود تھے۔پریس کانفرنس میں ان رہنماؤ ں نے کہا کہ اس دوران پارلیمنٹ میں کاشتکاروں کا گلا دبایاجاتا ہے ،اور کسانوں اورمجبور کارکنوں کو سڑکوں پر بے دردی سے مارا پیٹا جارہا ہے۔ ملک میں کرونا، سرحد پر چائنا ، اور کھیتوں میں مودی جی نے حملہ بول دیا ہے ، یہ کسان مخالف ایجنڈا مودی سرکار نے 2006 میں بہار سے شروع کیا تھا۔ جہاںکا کسان تباہ ہوگیا ۔ اب یہ تینوں کالے قانون کے ذریعے یہاں لائے ہیں۔ اشوک گہلوت نے کہا کہ آج کی صورتحال این ڈی اے حکومت نے بنائی ہے۔ جس کی وجہ سے آج پورا ملک سڑکوں پراتر آیا ہے۔ آپ جانتے ہیں کہ کس طرح سے ملک میں فیصلے کیے جارہے ہیں۔ جب سے این ڈی اے کی حکومت آئی ہے ، چاہے وہ نوٹ بندی ہو، جی ایس ٹی ہو یا زرعی بل۔ سارا کام کسی سے بات کیے بغیر کیا جارہا ہے۔ ریاست میں زرعی مینڈیاں بننے میں 40 سال لگے، لیکن آپ انہیں ایک ہی جھٹکے میں جڑ سے اکھاڑ پھینکنے کا فیصلہ کر رہے ہیں۔ آپ بڑے تاجروں کو چھوٹ دے رہے ہیں۔وزیر اعلیٰ گہلوت نے کہا کہ کسان ذہین ہے، وہ سمجھ سکتا ہے کہ اس کی دلچسپی کس طرف محفوظ ہے۔ اب حکومت دفاع میںایم ایس پی کے لانے کی بات کر رہی ہے۔ صورتحال سنگین ہے، جس طرح سے تینوں بل منظور ہوئے وہ شرمناک ہے۔اس موضوع پر کسی سے بات نہیں کی، ایوان میں اس پر مباحثہ نہیں کیا گیا ۔ گہلوت نے کہا کہ اگر کسان اور تاجر برادری کے مابین کوئی تنازعہ ہے تو کسان منڈی میں معاملہ کا تصفیہ ہوجاتا ہے ، اب اگر کوئی تنازعہ ہو گا،تو آپ کو ایس ڈی ایم کے پاس جانا پڑے گا، پھر کلکٹر سے اپیل کرنی ہوگی ، تمام سرگرمیاں کسان مخالف ہیں، جس سے منڈیاں ختم ہوں گی۔وہیں سرجے والا نے کہا کہ آج ملک بھر میں کسانوں اور کھیت کے مزدوروں نے بھارت بند کا اعلان کیا ہے۔ کانگریس پارٹی اس بند میں کسان کے ساتھ کھڑی ہے۔ بی جے پی سبز انقلاب کے خاتمے کی سازش کررہی ہے۔ مودی جی کسانوں سے قسم کھاتے ہیں ، جبکہ کچھ تاجربرادی کو فائدہ پہنچاتے ہیں ۔ کسان اور کھیت مزدور کے مستقبل کو روندکر مودی جی نے ان تینوں کالے قوانین کے ذریعہ تباہی اور مصائب کی ’داستان ‘ کا حرف اول لکھا ہے۔ یہ کسان اور کھیت کے خلاف مکروہ سازش ہے۔

You might also like