Baseerat Online News Portal

زراعتی بل کے خلاف اپوزیشن پارٹیوں کی طرف سے بھارت گیر بند کا بارش کے باوجود بھی کئی مقامات پر اثر رہا۔

 

رفیع ساگر /بصیرت آن لائن

جالے ۔۔ زراعتی بل کے خلاف اپوزیشن پارٹیوں کی طرف سے بھارت گیر بند کا بارش کے باوجود بھی کئی مقامات پر اثر رہا۔حالانکہ ٹریفک معمول کے مطابق نہیں چلی، سڑکوں پر لوگوں کی بھیڑ بھی کم رہی ۔جن ادھیکار پارٹی ڈیمو کریٹک کے ذریعہ جالے اسمبلی حلقہ کے بھرواڑہ بازار میں بند کا اہتمام کیا گیا۔یہاں کسانوں کے ساتھ جالے اسمبلی حلقہ کے ممکنہ امیدوار امن جھا سمیت کئی لیڈران شامل ہوئے۔موقع پر امن جھا نے کہا کہ مودی حکومت نے کسانوں کے ساتھ شروع سے ہی دہرے نظریے کا استعمال کیا ہے اور ہمیشہ مرکزی حکومت نے سرمایہ داروں کو فائدہ پیونچانے کا کام کیا ہے۔ اس بل میں بھی کسانوں کیلئے کچھ خاص فائدے نہیں ہیں یہی وجہ ہیکہ ملک بھر میں اس بل کا مسلسل احتجاج جاری ہے ۔ انہوں نے کہا کہ جب تک مرکزی حکومت اس بل میں ترمیم نہ کرے یا واپس نہیں لے گی اس وقت تک تحریک جاری رہے گی۔

موقع پر اقلیتی ضلع صدر چاند حامد ، ضلع جنرل سکریٹری راشد رضا عرف رنکو ، اقلیتی ضلع جنرل سیکرہٹری کفیل احمد ، ایس ڈی پی آئی لیڈر ڈاکٹرمحبوب عالم رحمانی ، میڈیا انچارج معظم مختار ، اسٹوڈنٹ یونین کے لیڈر سیف الرحمان وغیرہ موجود تھے۔اسی طرح عاپ کے امیدوار وملیش ٹھاکر کی قیادت میں سنگھواڑہ حلقے میں بند کو کامیاب بنایا گیا۔جالے میں آرجے ڈی لیڈر مولانا غلام مذکر خان، ایم رحمان عرف چنو بیگ، کانگریس کے ے صادق آرزو، عامر اقبال اور کمتول میں سید تنویر انور، اعجاز انور، بھرواڑہ میں کانگریس کے حافظ گلاب، معراج حسین، اظہار احمد منا، سی پی آئی کے احمد علی تمنے، کدم چوک پر سی پی آئی کے ذین الحق، ششی کانت چودھری، گھوگھراہا میں سی پی آئی کے پروفیسر شبیر احمد بیگ، سدھیر ساہ، جالے بلاک ہیڈکوارٹر پر سی پی آئی ایم کے للن پاسوان اور شہزاد تمنا کی قیادت میں بند کو کامیاب بنایا گیا۔

 

You might also like