Baseerat Online News Portal

ٹکٹ کے مطالبے پربی جے پی دفترمیں ہنگامہ،موجودہ رکن اسمبلی کے خلاف نعرے بازی،نائب وزیراعلیٰ کاگھیرائو

پٹنہ 27ستمبر(بی این ایس )
اتوارکی سہ پہر کو پٹنہ کے بی جے پی آفس میں کافی ہنگامہ ہوا۔ لکھی سرائے اسمبلی حلقہ کے ٹکٹ کی دعویدار کماری ببیتا کے حمایتی نے ان کے لیے ٹکٹ کا مطالبہ کرتے ہوئے ہاتھا پائی کی ہے۔ اس دوران لکھی سرا ئے کے بی جے پی کارکنوں نے نائب وزیراعلیٰ سشیل کمار مودی کوگھیر لیا۔ہنگامہ کھڑا کرنے والے بی جے پی کارکنوں نے کہاہے کہ موجودہ ایم ایل اے اوروزیروجے سنہا اپنے حلقے میں توقعات کے مطابق نہیں رہ رہے ہیں۔ لہٰذا ٹکٹ صرف کماری ببیتا کو دیا جانا چاہیے۔ کارکنوں نے پارٹی دفتر میں وجے سنہاکے خلاف بھی نعرے بازی کی۔بہار اسمبلی انتخابات کی تاریخوں کے اعلان کے بعدبھی این ڈی اے میں سیٹ شیئرنگ کا معاملہ حل نہیں ہوا ہے۔ دوسری طرف لوک جن شکتی پارٹی کے لیڈرچراغ پاسوان کی 143 سیٹوں پرتنہا مقابلہ کرنے کی سیاست نے بھی این ڈی اے کے لیے مشکلات میں اضافہ کردیا ہے۔ اگر ذرائع پر یقین کیا جائے توبھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) اور جنتا دل یونائیٹڈ کے درمیان سیٹ شیئرنگ کے 50:50 فارمولے پرتقریباََ اتفاق رائے ہوگیا ہے۔بہار اسمبلی انتخابات کی تاریخوں کا اعلان کردیا گیا ہے۔ اس بار اسمبلی انتخابات تین مراحل میں ہوں گے۔ 28 اکتوبر کو پہلے مرحلے میں ووٹنگ ، 3 نومبر کو دوسرے مرحلے کی ووٹنگ اور 7 نومبر کو تیسرے مرحلے کی ووٹنگ ہوگی۔ اس کے بعدبہار اسمبلی انتخابات کے نتائج 10 نومبر کو آئیں گے۔ بہار کی 243 رکنی اسمبلی کی میعاد 29 نومبر کو ختم ہوگی۔

You might also like