Baseerat Online News Portal

پل نہیں توووٹ نہیں،مظفرپورکے تیس ہزارافرادنے الیکشن کابائیکاٹ کیا

مظفرپور28ستمبر(بی این ایس )
اس بارپل بہار اسمبلی انتخابات میں ایک بڑا مسئلہ بن سکتا ہے۔ کیونکہ پچھلی کئی دہائیوں سے بہارکے لیڈر اپنے علاقوں میں جاتے ہیں وعدے توکرتے ہیں لیکن اسے انجام نہیں دیتے ہیں۔ اس بار بانس سے بنے چاچی پل ایک بڑی پریشانی ہوسکتی ہے۔مطالبہ کو نظرانداز کرنا سیاسی جماعتوں اور امیدواروں کے لیے مشکل ہوسکتاہے۔اورائی اور کتراکے لوگوں کے مطابق اس بار یہاں کے عوام آنے والے انتخابات میں لیڈران کوسبق سکھائیں گے۔ جب تک پل کی تعمیر نہیں ہوگی اس وقت تک ووٹنگ نہیں ہوگی۔ مظفر پور کے 5 دیہات کے لوگ ووٹ کا بائیکاٹ کریں گے۔ ان گائوں میں تقریباََ30 ہزار افراد رہتے ہیں۔ چاچاری پل کے بغیر مظفر پور کے اوری اور کترا کے لوگ نہیں رہ سکتے ہیں۔ سال کے 7 سے 8 ماہ تک یہاں کے لوگوں کی آمدورفت چاچری پل سے ہوتی ہے۔ اوری اسمبلی حلقہ کے خوبصورت خولی گاؤں میں پْل تعمیر نہیں ہوسکا۔ لوگ وہاں سے تعمیر شدہ چاچاری پل کی مدد سے بانس اکٹھا کررہے ہیں اور سفر کررہے ہیں۔

You might also like