Baseerat Online News Portal

بلیا گاؤں میں پرتشدد جھڑپ 8 افراد گرفتار ، 21 زخمی  2 الگ الگ ایف آئی آر میں درجنوں افراد نامزد

بلیا گاؤں میں پرتشدد جھڑپ 8 افراد گرفتار ، 21 زخمی

2 الگ الگ ایف آئی آر میں درجنوں افراد نامزد

رفیع ساگر /بصیرت آن لائن

جالے۔۔ سمری تھانہ کے جلوار پنچایت کے بلیا گاؤں میں شادی کے لئے لڑکی کا اغوا کئے جانے کے معاملے میں پرتشدد جھڑپ میں دونوں جانب سے 21 افراد زخمی ہوئے ہیں۔سبھی زخمیوں کا ابتدائی علاج سنگھواڑہ ہیلتھ سنٹر میں کیا گیا ہے ۔مارپیٹ کی وجہ یہ تھی کہ مہتو خاندان کا لڑکا راؤت برادری کی لڑکی کو شادی کی نیت سے بھگاکر لے گیا تھا۔ اتوار کے روز دونوں ذاتوں کے لوگ وقار کا معاملہ سمجھ کر ایک دوسرے پر روایتی ہتھیاروں سے جان لیوا حملہ کردئے جس میں دونوں جانب سے کئی افراد شدید طور پر زخمی ہوگئے۔معاملہ 2 ذاتوں سے جڑا ہونے کے سبب پولیس نے بھی فوری کارروائی کرکے 8 افراد کو گرفتار کر لیا جسے پیر کو ایف آئی آر درج کر عدالتی تحویل میں جیل رسید کردیا گیا ہے۔ سمری تھانہ صدر ہری کشور یادو نے بتایا کہ گرفتار 8 ملزمین میں روپیش کمار ، رتیش کمار ، رمیش مہتو ، پنکج کمار ، لال راوت ، سنجے کمار ، شمبھو راوت ، شیوشنکر راوت شامل ہیں۔اس ضمن میں متاثرہ دونوں خاندان کی جانب سے الگ الگ ایف آئی آر درج کروائی گئی ہے۔ لالا راؤٹ کے ذریعہ دائر پہلی ایف آئی آر میں رمیش مہتو ، روپیش کمار ، رتیش کمار ، پنکج کمار ، شیتل مہتو ، بابو لال مہتو ، شیونرائن مہتو ، گونی دیوی ، لیلا دیوی ، اور مبی او پی کے سومن مہتو عرف چھوٹو کو نامزد کیا گیا ہے۔ دوسری طرف سے رمیش مہتو نے لالا راؤت ، روپیش کمار ، جتیندر راوت ، رام لکھن راؤت ، نونو راوت ، ٹن ٹن راؤت ، شمبھو راوت ، رام شریش راوت ، ساجن کمار ، سنجے کمار ، روبی دیوی اور مظفر پور ضلع کے گائے گھاٹ کے شیوشنکر راوت کو نامزد ملزم بنایا گیا ہے۔انہوں نے بتایا کہ پرتشدد مارپیٹ کا معاملہ لڑکا لڑکی کے عشق و معاشقہ سے جڑا ہوا ہے۔ تھانہ انچارج نے کہا کہ گاوں میں پولیس کی نقل و حرکت تیز کردی گئی ہے۔معاون داروغہ اجیت کمار نے دونوں معاملے کی تحقیقات شروع کردی ہے۔

You might also like