Baseerat Online News Portal

راہل نے کسانوں سے کہا : ہندوستان کے مستقبل کے لئے زرعی قوانین کی کرنی ہوگی مخالفت

نئی دہلی ،29؍ستمبر(بی این ایس )
منگل کو کانگریس کے سابق صدر راہل گاندھی نے ایک بار پھر زراعت سے متعلق قوانین پر حکومت کو نشانہ بنایا اور کہا کہ ملک کے مستقبل کے لئے ان قوانین کی مخالفت کرنی ہوگی۔ انہوں نے کسانوں سے ڈیجیٹل بات چیت کے دوران یہ دعویٰ بھی کیا کہ نوٹ بندی اور جی ایس ٹی کی طرح ان قوانین کا مقصد بھی کسانوں اور مزدوروں کو کمزور کرنا ہے۔ اس ڈیجیٹل بات چیت میں پنجاب، ہریانہ، مہاراشٹرا، بہار اور بہت ساری ریاستوں کے کسانوں نے ان قوانین کے سلسلے میں بات کی ہے۔ گاندھی نے دعوی کیاکہ نوٹ بندی کے وقت کہا گیا تھا کہ یہ کالے دھن کے خلاف لڑائی ہے۔ یہ سب جھوٹ تھا۔ اس کا ہدف کسان مزدور کو کمزور کرنا تھا۔ اس کے بعد جی ایس ٹی آئی تب بھی یہی مقصد تھا۔ انہوں نے کہاکہ کورونا بحران کے دوران کسانوں، مزدوروں اور غریبوں کو رقم نہیں دی گئی تھی۔ صرف کچھ بڑے صنعت کاروں کو ہی رقم دی گئی۔ کورونا کے وقت ان صنعتکاروں کی آمدنی میں اضافہ ہوا اور کسان کی آمدنی کم ہوتی گئی۔ اس کے باوجود انہیں رقم نہیں دی گئی ۔کانگریس کے رہنما نے الزام لگایا کہ ان تینوں قوانین اور نوٹ بندی ،جی ایس ٹی میں زیادہ فرق نہیں ہے۔ فرق صرف اتنا ہے کہ کلہاڑی پہلے آپ کے پیر میں ماری گئی اور اب سینے میں چاقو مارا گیا۔ گاندھی نے کہاکہ ان قوانین کی مخالفت کسانوں کے لئے نہیں بلکہ ہندوستان کے مستقبل کے لئے کرنا پڑے گی۔

You might also like