Baseerat Online News Portal

ہائی کورٹ میں فیصلے کو چیلنج کریں گے:ظفریاب جیلانی

نئی دہلی،30؍ستمبر( بی این ایس )
مسجد شہادت کیس میں سی بی آئی کی خصوصی عدالت کے پر بھارتیہ جنتا پارٹی کے کیمپ میں خوشی کا ماحول ہے ، جبکہ مسجدفریق کے لوگ اعلیٰ عدالت میں جانے کی تیاری کر رہے ہیں۔ مشہور وکیل ظفریاب جیلانی نے کہا ہے کہ وہ اس فیصلے کو ہائی کورٹ میں چیلنج کریں گے۔اس فیصلے کے آنے کے بعد سنی سنٹرل وقف بورڈ کے وکیل ظفریاب جیلانی نے کہا کہ یہ فیصلہ مکمل طورپرشواہداور قانون کے خلاف ہے۔ 1994 سے ہائی کورٹ اور سپریم کورٹ نے سب کہا ہے کہ یہ جرم ہوا ہے ۔ظفریاب جیلانی نے کہاہے کہ اعلیٰ پولیس افسران اور میڈیا والوں نے ان سب کو نامزد کیا تھا اور ایل کے اڈوانی جیسے دوسرے لوگ ایک دھکا اور دو کہتے تھے۔ جیلانی نے کہا کہ یہ 198 اور 1976 کا جرم ہے اور ان سب کوبری کردیا گیا ، یہ فیصلہ ہم سب ہائی کورٹ میں چیلنج کریں گے۔ بابری مسجد شہادت کیس میں سی بی آئی کی خصوصی عدالت کے فیصلے کے بعد ، بھارتیہ جنتا پارٹی کے کیمپ میں خوشی کا ماحول ہے ، جب کہ مسجد فریق کے لوگ اعلیٰ عدالت جانے کی تیاری کر رہے ہیں۔ مشہور وکیل ظفریاب جیلانی نے کہا ہے کہ وہ اس فیصلے کو ہائی کورٹ میں چیلنج کریں گے۔

You might also like