جہان بصیرتنوائے خلق

امریکہ اور دہشت گردی

مکرمی!
عالمی سطح پر جس طرح دہشت گردی پھیل رہی ہے اور اس کا شکار روزانہ سینکڑوں افراد ہورہے ہیں، اس کے رکنے کے کوئی آثارنظر نہیں آرہے ہیں، دنیا کا ہر ملک اپنے اپنے طور پر دہشت گردی روکنے کے لیے بے شمار اقدامات کررہا ہے؛ لیکن بے سود۔ امریکہ اور فرانس دنیا سے دہشت گردی ختم کرنے کے لیے اتحادی صورت میں آگے بڑھ رہے ہیں؛ لیکن ان ممالک پر کون یقین کرے گا کہ یہ دہشت گردی ختم کرنے کے سلسلے میں اپنا مثبت عمل کررہے ہیں کیونکہ عالمی سطح پر یہ بات اچھی طرح سمجھی جاسکتی ہے کہ شام، عراق ، افغانستان اور دیگر مسلم ممالک میں ان ہی ممالک یعنی امریکہ فرانس اور ان کے حلیف ممالک نے اپنی سازشوں کے تحت دہشت گردی پھیلائی اور ایسی پھیلائی کہ کوئی صورت اس کے ختم ہونے کی نظر نہیں آتی۔
اس تناظر میں اقوام متحدہ کو سب سے پہلے ایک ایسا موثر قدم اُٹھا چاہیے جس سے امریکہ اور فرانس کی یہ دہشت گردی کا عمل منظر عام پر لایا جاسکے؛ لیکن اقوام متحدہ ایسا کرنے سے مجبور ہے۔ وہ امریکہ کے اشاروں پر چلنے والا ادارہ ہے؛ لیکن روس جیسا ملک بھی امریکہ کے لیے منہ بند رکھتا ہے۔ چین جیسا ملک امریکہ کے لیے منہ بند رکھتا ہے جبکہ روس اور امریکہ کے درمیان سیاسی تنازعہ ہے اور اس طرح امریکہ اور چین کے درمیان بھی سیاسی تنازعہ ہے،اس روشنی میں یہ سوچنا ہوگا کہ امریکہ ایک ایسا ملک ہے جو دوسرے ممالک پر اپنی مرضی اور اپنے مفادات و مقاصد کے تحت دہشت گردانہ عمل کرتا ہے اور دنیا کے کسی بھی ملک میں اتنی سیاسی قوت نہیں ہے جو اس پر انگلی اُٹھاا سکے، یہاں تک کہ اقوام متحدہ بھی امریکہ کے آگے خاموش ہے، لہٰذا عالم سطح پر تمام ممالک اس پیرائے میں سوچیں کہ اگر ہمیں یہ عالمی دہشت گردی ختم کرنی ہے تو ہمیں امریکہ پر لگام کسنی ہے، امریکہ کی سازشوں کو سمجھنا ہے، اس کے ارادوں و پالیسی کو سمجھنا ہے کہ اس پر کس طرح قابو پایا جاسکتا ہے؛ لیکن طرہ یہ ہے کہ امریکہ دہشت گردی روکنے کے لیے سب سے آگے ہے، دہشت گردی روکنے کے سلسلے میں کانفرنس منعقد کرتا رہتا ہے، اور داعش کو نیست و نابود کرنے کا عزم رکھتا ہے، اس کی آڑ میں ہی وہ سب کچھ کرتا ہے جو اس کے اپنے مفادات سے تعلق ہے۔ اس طرح دہشت گردی کا بانی امریکہ ہے جس کو کوئی ملک دہشت گردا قرار نہیں دے سکا اور وہ دوسرے ممالک کو دھمکیاں دیتا رہتا ہے کہ اس کو دہشت گرد ملک قرار دے دیا جائے گا؛لیکن امریکہ وہی کرتا ہے جو وہ اپنے لیے مناسب سمجھتا ہے ۔ اس طرح یہ عالمی دہشت گردی کے ختم ہونے کے کوئی آثار نظر نہیں آتے بلکہ دن بہ دن ان میں اضافہ ہی ہورہا ہے۔(یو این این)

حکیم سراج الدین ہاشمی
ہاشمی دواخانہ۔ محلہ قاضی زادہ، امروہہ
e-mail:info@hashmi.com
M. 9058058077

Tags

Sajid Qasmi

غفران ساجد قاسمی تعلیمی لیاقت : فاضل دارالعلوم دیوبند بانی چیف ایڈیٹر بصیرت آن لائن بانی چیف ایڈیٹر ہفت روزہ ملی بصیرت ممبئی بانی و صدر رابطہ صحافت اسلامی ہند بانی و صدر بصیرت فاؤنڈیشن

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker