Baseerat Online News Portal

وجے مالیا کی حوالگی پر عمل نہیں کررہا ہے برطانیہ،مرکز نے سپریم کورٹ میں کہا – خفیہ کارروائی جاری ہے

نئی دہلی،05 ؍اکتوبر(بی این ایس )
مرکزی حکومت نے سپریم کورٹ کو بتایا ہے کہ مفرور شراب کے کاروباری وجئے مالیا کی حوالگی کا حکم برطانیہ کی سپریم کورٹ نے دیا ہے، لیکن اس پر عمل نہیں ہو رہا ہے۔ برطانیہ میں اس معاملے میں کچھ خفیہ کاروائیاں جاری ہیں، جن کی معلومات ہندوستان کو بھی نہیں دی گئیں۔ یہ انکشاف پیر کو سپریم کورٹ میں وجئے مالیاکے خلاف توہین عدالت کیس کی سماعت کے دوران ہوا۔ دراصل سپریم کورٹ نے توہین عدالت سے متعلق ایک معاملے میں وجے مالیا کے وکیل سے پوچھا، اس معاملے میں مالیا کب پیش ہوسکتے ہیں۔لندن میں حوالگی کی کارروائی کہاں تک پہنچی؟ عدالت یہ بھی جاننا چاہتی تھی کہ کیس میں کیا ہو رہا ہے اور حوالگی میں کس طرح کی رکاوٹ ہے۔اس پر وزارت خارجہ کے ذریعہ عدالت کو بتایا گیا کہ برطانیہ کی سپریم کورٹ نے حوالگی کا حکم دیا تھا، لیکن اس پر عمل نہیں ہورہا ہے۔ کچھ خفیہ کارروائیاں ہو رہی ہیں، جن کے بارے میں حکومت ہند کو آگاہ نہیں کیا گیا ہے۔ حکومت ہند کو نہ تو کوئی اطلاع دی گئی ہے اور نہ ہی اسے فریق بنایا گیا ہے۔ اب سپریم کورٹ 2 نومبر کو اس معاملے کی سماعت کرے گا۔اس سے قبل سپریم کورٹ نے مفرور تاجر وجے مالیا کو 5 اکتوبر کی شام 2 بجے سے پہلے ذاتی طور پر پیش ہونے کی ہدایت کی تھی۔ عدالت عظمی نے وزارت داخلہ کو ہدایت کی تھی کہ وہ اکتوبر میں مالیا کی عدالت میں پیشی میں آسانی پیدا کرے۔ سپریم کورٹ نے مالیا کے توہین عدالت کیس کے 2017 کے فیصلے پر نظر ثانی کے لئے دائر درخواست خارج کرتے ہوئے اس حکم کو خارج کردیا تھا۔ بینچ نے توہین آمیز کے اپنے حکم کہا تھا کہ 25 فروری، 2016 کو مالیا کے اکاؤنٹ میں ساڑھے سات کروڑڈالر کی ادائیگی کے ایک حصے کے طور پر 4 کروڑ ڈالر آئے تھے۔ اس رقم کو انہوں نے 26 فروری اور 29 فروری 2016 کو کچھ ہی دنوں میں دوسری جگہ منتقل کردیا۔ عدالت کے بار بار احکامات دینے کے باوجود مالیا نے اپنے اثاثوں کا واضح طور پر انکشاف نہیں کیا۔ اکاؤنٹ میں آنے اور پھر اسے نکالنے کے بارے میں نہ ہی کسی نے کوئی معلومات دی تھی۔ مالیا نے دلیل دی کہ عدالت عظمیٰ کی ہدایت کے مطابق انہیں31 مارچ 2016 کو اپنے اثاثوں کا انکشاف کرنا تھا اور اس طرح سے عدالت کی کسی بھی ہدایت کی خلاف ورزی نہیں ہوئی تھی۔

You might also like