Baseerat Online News Portal

ہاتھرس معاملہ: چندر شیکھر آزاد سمیت بھیم آرمی کے 400 کارکنوں کے خلاف مقدمہ درج

ہاتھرس،05 ؍اکتوبر( بی این ایس )
پولیس نے پیر کے روز بھم آرمی چیف چندرشیکھر راون سمیت 400 پارٹی کارکنوں کے خلاف ہنگامہ کرنے اور ممنوعہ احکامات کی خلاف ورزی پر مقدمہ درج کیا۔ چندر شیکھر اتوار کے روز کارکنوں کے ساتھ ہاتھرس میں متاثرہ لڑکی کے گاؤں پہنچے تھے پولیس نے پہلے اسے متاثرہ کے کنبہ کے افراد سے ملنے کی اجازت نہیں دی، لیکن کافی ہنگامے اور لاٹھی چارج کے بعد انہوں نے آزاد سمیت دس کارکنوںکو اجازت دے دی۔پولیس نے چندر شیکھر راون اور دیگر پر دفعہ 188، دفعہ 144 کی خلاف ورزی کا مقدمہ درج کیا ہے۔ یہ مقدمہ ساسنی کوتوالی ضلع کے تھانے میں سیکڑوں افراد کے خلاف درج کیا گیا تھا۔ اس میں آر ایل ڈی رہنما جینت چوہدری بھی شامل ہیں، جن پر پولیس پر لاٹھی چارج کا الزام ہے۔چندر شیکھر آزاد نے متاثرہ کے لواحقین سے ایک گھنٹہ گفتگو کی۔ انہوں نے متاثرہ افراد کے اہل خانہ اور وائی زمرے کی سکیورٹی کا مطالبہ اورسپریم کورٹ کے ریٹائرڈجج سے اس معاملے کی تحقیقات کا مطالبہ کیا ۔ انہوں نے کہا کہ گاؤں میں مقتول کا کنبہ خوف کے سائے میں زندگی گزار رہا ہے۔ لیکن یوگی حکومت مدد نہیں کررہی ہے۔اس سے قبل یوپی پولیس کانگریس کے 500 رہنماؤں اور کارکنوں کے خلاف بھی مقدمات درج کرچکی ہے۔ سابق کانگریس صدر راہل گاندھی اور پرینکا گاندھی کے ساتھ یہ کارکن دو دن قبل ڈی این ڈی فلائی اوور پر جمع ہوئے تھے۔ ڈی این ڈی فلائی اوور پر بھی کافی ہنگامہ اور پولیس لاٹھی چارج کے درمیان راہل اور پرینکا سمیت صرف پانچ رہنماؤں کو ہاتھرس جانے کی اجازت دی گئی تھی۔کانگریس لیڈر نے الزام لگایا تھا کہ پولیس کے لاٹھی چارج میں کافی لوگ زخمی ہوگئے ہیں۔

You might also like