Baseerat Online News Portal

ایل اے سی پر چین کے ساتھ تناؤ کے دوران ایئر فورس کے چیف نے کہا: ہم کسی بھی چیلنج کے لئے تیار ہیں

نئی دہلی،05 ؍اکتوبر( بی این ایس )
چین کے ساتھ سرحد پر تناؤ کے درمیان ایئر فورس کے چیف مارشل آر کے ایس بھدوریا نے کہا کہ ہم کسی بھی چیلنج کے لئے تیار ہیں۔ بھدوریا نے سالانہ پریس کانفرنس میں کہا کہ پڑوس میں خطرہ بڑھ گیا ہے۔ ہم نے اپنی صلاحیت میں بھی اضافہ کیا ہے۔ ہم فوری طور پر فوجی جوان بھیج چکے ہیں۔ رافیل کی آمد کے ساتھ ہی ہماری طاقت میں اضافہ ہوا ہے۔ تین سالوں میں رافیل اور تیجس کا پورا بیڑا کام کرنا شروع کردے گا۔چین کے ایل اے سی کے تنازعہ کے درمیان ایئرفورس کے سربراہ نے کہا کہ ہم کسی بھی چیلنج کے لئے تیار ہیں۔ چین کے مقابلے میں لداخ میں تعیناتی نہیں کی گئی، بلکہ دیگر آپریشنل علاقوں میں کی گئی ہے تاکہ کسی بھی صورتحال سے نمٹاجا سکے۔ ہم نے کوویڈ کے دوران بھی ہوائی جہاز کو جاری رکھا۔انہوں نے کہا کہ خواتین کو ایئر فورس میں ہر ممکن کردار میں لایا گیا ہے۔ اب ہمیں آگے سوچنا ہوگا۔ ہمیں مئی میں چین کی تحریک کے بارے میں معلوم ہوا۔ جیسا کہ ہمیں پتہ چلا ہم نے فورا ہی رد عمل ظاہر کیا۔ جو بھی ضرورت تھی اسے فورا ہی تعینات کردیا گیا تھا۔ شمال مشرق میں ہماری فضائیہ موجود ہے۔ اگر کچھ ہوتا ہے تو ہم سخت ردعمل کا اظہار کریں گے۔ انہوں نے کہا کہ ابھی ہم 83 تیجس پر توجہ مرکوز کررہے ہیں۔ مزید رافیل لینے کے بارے میں ابھی کوئی فیصلہ نہیں ہوا ہے۔ایئر چیف مارشل بھدوریا نے کہا کہ چینی ایئرفورس کو ہلکے میںمت لیں۔ وہ اپنے آپ میں مضبوط ہے۔ جے 20 کا تعلق پانچویں نسل سے ہے۔ انجن اتنا اچھا نہیں ہے۔ ہم اسی کے مطابق تیاری کرتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ ہم امید کرتے ہیں کہ بات چیت کے ذریعے معاملہ حل ہوجائے گا۔ اسی کے مطابق کارروائی کریںگے۔ تعیناتی اسی کے مطابق کی جائے گی۔انہوں نے کہا کہ دباؤ کے دوران ڈرون کا استعمال اہم ہوجاتا ہے۔ حملہ کرنے میں خاص ہے ۔ امریکہ کی تعیناتی ان کی اپنی مرضی سے ہے۔ ہماری جنگ کوئی اور نہیں ہمیں خود لڑنا ہوگا ۔ لداخ میں کیا ہوا اس کے بارے میں کچھ نہیں کہہ سکتے۔

You might also like