Baseerat Online News Portal

بی جے پی تیسری پارٹی کے ذریعے اپنی اتحادی جماعت کے خلاف نبردآزما

اویسی کے ساتھ پریس کانفرنس میں کشواہاکاطنز،6 پارٹیوں کے اتحادمیں کشواہاوزیراعلیٰ امیدوار
پٹنہ 8اکتوبر(بی این ایس )
بہاراسمبلی انتخابات میں ووٹنگ میں ابھی کچھ ہی دن باقی ہیں۔ دریں اثنا ریاست میں ایک اور محاذ داخل ہوگیا ہے ، جو این ڈی اے اور گرینڈ الائنس کو چیلنج کرے گا۔ جمعرات کو آر ایل ایس پی کے سربراہ اوپیندر کشواہا اور اے آئی ایم آئی ایم کے سربراہ اسدالدین اویسی نے نئے محاذ کا اعلان کیا۔اوپیندر کشواہا نے بتایاہے کہ اس محاذ کے کنوینر دیویندر یادو ہوں گے۔ اس محاذکوگرینڈ ڈیموکریٹک سیکولر فرنٹ کا نام دیا گیا ہے ، جو مجموعی طور پر 6 جماعتوں پرمشتمل ہے۔ زیراعلیٰ کے عہدے کے لیے امیدوار اوپیندر کشواہا ہوں گے۔اس الائنس میں آر ایل ایس پی،ایم آئی ایم،بی ایس پی ،سہلدیوبھارتیہ سماج پارٹی،سماجوادی جنتادل، جنترک پارٹی (سوشلسٹ)شامل ہیں۔یہاں پریس کانفرنس میں اسدالدین اویسی نے کہاہے کہ ہمیں خوشی ہے کہ ہم بہارکے لوگوں کومتبادل دینے میں کامیاب ہوگئے ہیں اور نئی جماعتیں ہمارے ساتھ آئیں۔ نتیش کمارکی حکومت کے دوران بہار کے عوام کو 15 سالوں سے دھوکہ دیاگیاہے۔ اب ایک نئے آپشن کی ضرورت ہے۔اوپیندر کشواہاکی جانب سے کہاگیاہے کہ ریاست میں تعلیم کا کوئی انتظام نہیں ، صرف پیسوں والے بچوں کو تعلیم دی جارہی ہے۔ لوگوں کوروزگارکے لیے باہر جانا پڑتا ہے۔ اوپیندر کشواہا نے طنز کیا کہ ہمارا اتحاد تیار ہے ، لیکن عظیم اتحاداور این ڈی اے آپس میں لڑرہے ہیں۔بی جے پی تیسری پارٹی کے توسط سے اپنی شراکت دار پارٹی کے خلاف مقابلہ کررہی ہے۔یہ اتحادکے دیگر رہنماؤں نے وعدہ کیاہے کہ برسراقتدار آنے کے بعد ان کے سیلاب کی مشکل دور ہوجائے گی۔ بہار اسمبلی انتخابات میں راشٹریہ لوک سمتا پارٹی، اسدالدین اویسی کی اے آئی ایم آئی ایم اور بہوجن سماج پارٹی کے مابین ایک معاہدہ طے پایاجس میں نئی جماعتیں آئیں۔

You might also like