Baseerat Online News Portal

بی جے پی کے’ باغی لیڈروں‘ کا ایل جے پی ٹھکانہ،جے ڈی یواپنی اتحادی سے ناراض

پٹنہ 8اکتوبر(بی این ایس )
اگرچہ بہار انتخابات میں لوک جن شکتی پارٹی این ڈی اے سے باہر ہوگئی ہے لیکن انتخابات میں لوک جن شکتی پارٹی کے کردارکے بارے میں بی جے پی اور جنتا دل یونائیٹڈ کے درمیان ابھی بھی تناؤہے۔ ناراض بی جے پی لیڈر راجندر سنگھ ایل جے پی میں شامل ہوگئے۔ راجندر سنگھ کو بہار بی جے پی کا نائب صدر اور بہار میں آر ایس ایس کا چہرہ سمجھا جاتا تھا لیکن ماضی میں ، ٹکٹ نہ ملنے پر ناراض ، راجندر سنگھ نے لوک جن شکتی پارٹی میں شمولیت اختیار کی ہے۔ایل جے پی نے بہار حکومت کے وزیراورجنتادل یونائیٹڈ امیدوار جے کمارسنگھ کے خلاف ٹکٹ دے کر راجیندر سنگھ کو دینارا اسمبلی سے انتخابی میدان میں اتاراہے۔ 2015 میں بھی بی جے پی نے جے کمار سنگھ کے خلاف راجندر سنگھ کو ٹکٹ دیا تھالیکن وہ انتخاب ہار گئے۔بی جے پی کے دو سابق ممبران اسمبلی بھی لوک جن شکتی پارٹی میں شامل ہوئے جس میں رامیشور چورسیاشامل ہیں۔ بی جے پی کے لیڈروں نے دہلی میں چراغ پاسوان کے سامنے لوک جن شکتی پارٹی کی رکنیت لی۔چراغ پاسوان کی پارٹی میں شامل ہونے کے فوراََبعد اوشا ودیاارتھی کو پیلی گنج اسمبلی سے ایل جے پی کا ٹکٹ مل گیا۔ اوشا ودیاارتھی پیلی گنج نشست سے جنتا دل یونائیٹڈکے امیدوار جے وردھن یادو کو چیلنج کریں گی۔ اوشا ودیارتی بہار اسٹیٹ ویمن کمیشن کے ممبربھی ہیں۔رامشور چورسیاکے بھی پارٹی میں شامل ہونے کے بعد چراغ پاسوان نے انہیں سہسرام اسمبلی سے ایل جے پی کا امیدواربنایاہے۔اصل این ڈی اے بی جے پی اور ایل جے پی بن گئی ہے۔ بی جے پی کارکن جے ڈی یو کو این ڈی اے کاحصہ نہیں مانتے ہیں۔ بی جے پی کارکنان نتیش کمار سے ان کے کام کے انداز یا بدعنوانی سے ناراض ہیں۔لوک جن شکتی پارٹی میں شامل ہونے کا عمل صرف بی جے پی کے باغی رہنماؤں تک ہی محدود نہیں ہے۔ جے ڈی یولیڈربھگوان سنگھ کشواہابھی پارٹی چھوڑ کر 2 دن پہلے ہی لوک جن شکتی پارٹی میں شامل ہوگئے تھے۔جے ڈی یو میں لوک جن شکتی پارٹی کے ٹکٹ پر انتخاب لڑنے والے بی جے پی کے باغی لیڈروں کے لیے ناراضگی ہے۔ بتایا جارہا ہے کہ بی جے پی کے باغی رہنماؤں پر غور نہیں کیاجاتا ہے اور انہوں نے لوک جن شکتی پارٹی سے الیکشن لڑنے کا فیصلہ کیا ہے۔بہار کے انتخابی انچارج دیویندر فڑنویس نے بھی بی جے پی کے باغی رہنماؤں پر برہمی کا اظہار کیا ہے اور کہا ہے کہ میں یہ واضح کرنا چاہتا ہوں کہ جو بھی این ڈی اے اتحادکے ساتھ لڑتا ہے وہ ہمارے ساتھ ہے اور لوگ این ڈی اے اتحاد سے باہر کسی بھی دوسری جماعت سے تعلق رکھتے ہیں۔ذرائع کے مطابق جنتا دل یواپنی انتخابی مہم کے دوران لوک جن شکتی پارٹی کے بارے میں اپنی پوزیشن واضح رکھنے کجے لیے بی جے پی پرمستقل دباؤ ڈال رہی ہے تاکہ لوگوں میں کوئی الجھن پیدانہ ہو۔جنتا دل یونائیٹڈ چاہتی ہے کہ بی جے پی انتخابات کے دوران لوگوں کو مستقل طور پر بتائے کہ این ڈی اے کے قائدنتیش کمار ہیں اورلوک جن شکتی پارٹی بی جے پی کی بی ٹیم نہیں ہے۔ جنتا دل یونائٹیڈ کو معلوم ہے کہ انتخابات میں لوک جن شکتی پارٹی کے امیدوار اسے سب سے زیادہ نقصان پہنچاسکتے ہیں ۔

You might also like