Baseerat Online News Portal

اترپردیش کے پرتاپ گڑھ میں دلت خاتون کے ساتھ عصمت دری ،پولیس نے کیس درج کرنے میں کی لاپرواہی

پرتاپ گڑھ ،16 ؍اکتوبر(بی این ایس )
اتر پردیش میں خواتین کے ساتھ جرائم رکنے کا نام نہیں لے رہے ہیں ۔ موجودہ واقعہ پرتاپ گڑھ کے مانک پور کا ہے، جہاں ایک دلت بیٹی کے ساتھ بازار جارہی خاتون کے ساتھ اجتماعی زیادتی کی گئی ۔ جب متاثرہ خاتون تھانے پہنچی تو پولیس نے اس کی خوب سرزنش کی ۔ بعد ازاں اعلیٰ عہدیداروں کی مداخلت پر مقدمہ درج کیا گیا۔دلت خاتون کے ساتھ عصمت دری کا معاملہ ضلع کے مانیک پور پولیس اسٹیشن کے چوکاپور علاقے میں پیش آیا۔ یہ واقعہ 14 اکتوبر کو اس وقت پیش آیا جب متاثرہ خاتون اپنی بیٹی کے ساتھ گھر جارہی تھی۔ راستے میں بیٹی سبزی لینے لگی جس کی وجہ سے دونوں کے مابین تھوڑا سا فاصلہ ہوگیا۔ اسی اثنا میں گاؤں کے وجئے جیسوال پہنچ گیا اور اس خاتون کو پل کے نیچے گھسیٹ کر لے گیا اور سا کے عصمت دری کی۔اسی وقت چیخ وپکار سن کر بیٹی وہاں پہنچی۔ اس دوران ملزم وجئے جیسوال مار کر فرار ہوگیا۔اس معاملے میں بھی پولیس کا بے رحمانہ چہرہ سامنے آیا۔ جب متاثرہ پولیس اسٹیشن پہنچی تو اسے شکایت درج کرنے کے بجائے زیادتی کا سامنا کرنا پڑا۔ مایوس خاتون نے افسران سے انصاف کی التجا کی۔ افسروں کی سرزنش کرنے کے بعد مانک پور پولیس نے مقدمہ درج کرکے ملزم نوجوان کو گرفتار کرلیا۔ ڈسٹرکٹ ایس پی انوراگ آریا کا کہنا ہے کہ ملزم سے تفتیش کے ساتھ ہی سی او کُنڈا کیس کی تفتیش کررہی ہے۔

You might also like