Baseerat Online News Portal

تلنگانہ میں عصمت دری کی کوشش کے بعد نابالغ لڑکی کو زندہ جلایا ، ملزم گرفتار

حیدرآباد ،16 ؍اکتوبر(بی این ایس )
تلنگانہ میں عصمت دری کی کوشش میں ناکامی کے زندہ جلائی گئی نابالغ لڑکی کی جمعہ کے روز موت ہوگئی۔ اس دل دہلا دینے والا واقعہ میں 13 سالہ لڑکی نے موت سے قبل اپنے بیان میں قاتل کی شناخت بھی کرلی تھی۔ ملزم کو پولیس نے گرفتار کرلیا ہے۔متاثرہ لڑکی ملزم کے بیمار باپ کی دیکھ بھال کے لئے ان کے گھر میں کام کررہی تھی ۔ عصمت دری اور زندہ جلانے کا واقعہ 18 ستمبر کو تلنگانہ کے ضلع کھم کا ہے۔ مجسٹریٹ کے سامنے درج بیان کے مطابق جب لڑکی لڑکے کے بیمار والد کی دیکھ بھال کے لئے گھر آئی تو اس نے عصمت دری کی کوشش کی۔ جب نابالغ لڑکی نے احتجاج کیا تو لڑکی کو زندہ جلایا گیا۔ 70 فیصد جلنے کے بعد لڑکی کو اسپتال میں داخل کرایا گیا تھا، جہاں وہ زندگی اور موت سے لڑنے کے بعد بالآخر دم توڑدیا۔ جب پولیس نے معاملے کی گہرائی سے تفتیش کی تو یہ معلومات سامنے آئی کہ نوعمر لڑکی نے پولیس کو دیئے گئے ایک بیان میں کہا تھا کہ نوجوان نے ان کے کپڑے پھاڑے اور عصمت دری کی کوشش کی۔ جب اس نے احتجاج کیا تو اس نے پٹرول چھڑک کر آگ لگا دی۔ پولیس نے ملزم نوجوان کو گرفتار کرلیا۔کھم پولیس کمشنر تفسیر اقبال نے بتایا کہ قتل اور عصمت دری کی کوشش کے علاوہ نوجوانوں کے خلاف ثبوت چھپانے اور اسے ختم کرنے کا بھی مقدمہ درج کیا گیا ہے۔ نوجوان شادی شدہ ہے اور اس کی حاملہ بیوی اس واقعے کے وقت اپنے میکے گئی تھی۔اقبال نے بتایا کہ ضلع کے میڈیکل آفیسرز سے یہ معلوم کرنے کے لئے کہا گیا ہے کہ اسپتال کے ڈاکٹروں یا کنبہ کے افراد نے شروع میں پولیس کو کیوں مطلع نہیں کیا تھا۔

You might also like