Baseerat Online News Portal

مذہبی جذبات بھڑکانے کاالزام،عدالت نے کنگنا رناوت کے خلاف ایف آئی آر کا حکم دیا

درخواست گزار نے کنگنارناوت کے ٹویٹ اور بیانات میں ہندو فنکار اور مسلم فنکار کے مابین معاشرتی تفریق پھیلانے کا الزام لگاتے ہوئے درخواست دائر کی ہے۔

ممبئی:باندرہ مجسٹریٹ کورٹ نے بالی ووڈ اداکارہ کنگنا رناوت کے خلاف ایف آئی آر کرنے کا حکم دے دیا ہے۔ کنگنا رناوت پر مذہبی جذبات بھڑکانے، فنکاروں کو ہندوؤں اور مسلمانوں میں بانٹنے اور معاشرتی بدعنوانی کو فروغ دینے کا الزام عائد کیا گیا ہے۔ درخواست گزار مننا ورالی نے گذشتہ کچھ عرصے میں کی گئی ٹویٹس کا حوالہ دیتے ہوئے کنگنارناوت کے خلاف تحقیقات کا مطالبہ کیا ہے۔ درخواست گزار نے کنگنارناوت کے ٹویٹ اور بیانات میں ہندو فنکار اور مسلم فنکار کے مابین معاشرتی تفریق پھیلانے کا الزام لگاتے ہوئے درخواست دائر کی ہے۔ اس معاملے میں کنگنا کی بہن رنگولی پربھی الزام عائدکیاگیاہے۔ درخواست گزار کا کہنا ہے کہ کاسٹنگ ڈائریکٹر کی حیثیت سے انہوں نے فلم انڈسٹری کے تمام ہندو اور مسلم فلم ڈائریکٹرز کے ساتھ کام کیا ، لیکن کبھی کسی امتیازی سلوک کو محسوس نہیں کیا۔ لیکن سوشل میڈیا (ٹویٹر ، انسٹاگرام)کے ذریعہ کنگنامسلسل بالی ووڈ انڈسٹری کے فنکاروں کو ہندوؤں اور مسلمانوں کی بنیاد پر تقسیم کرنے کی کوشش کر رہی ہیں۔ انہوں نے بالی ووڈ فلم انڈسٹری پر منشیات ، قاتلوں اور اقربا پروری میں بھی ملوث ہونے کاالزام لگایاہے۔یہ ٹویٹس بالی ووڈ اور عام لوگوں میں عدم استحکام پیدا کررہی ہیں۔آج کل کنگنارناوت بابر،پاکستان جیسے الفاظ خوب یادآرہے ہیں اسی لیے وہ سخت گیروں کی پسندبنی ہوئی ہیں.

You might also like